حضرت مولانا محمد اکرم اعوان رحمۃ اللہ علیہ کی شخصیت و خدمات

حضرت مولانا محمد اکرم اعوان رحمۃ اللہ علیہ، سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ کے شیخ اور تنظیم الاخوان پاکستان کے بانی ہوئے ہیں۔ آپ نے قرآن مجید کی تین تفاسیر کرنے کا منفرد اعزاز حاصل کیا، جو کہ آپ سے پہلے کسی مفسر کو حاصل نہیں ہوا۔ آپ نے تحریری تفسیر “اسرار التنزیل” کے نام سے فرمائی۔ جبکہ قرآن مجید کی پنجابی زبان میں پہلی بیانیہ تفسیر فرمائی اور “اکرام التفاسیر” کے نام سے اردو میں بیانیہ تفسیر فرمائی۔ اس کے علاوہ “اکرم التراجم” کے نام سے قرآن مجید کا آسان اردو ترجمہ کرنے کی بھی سعادت پائی۔

حضرت مولانا محمد اکرم اعوان رحمۃ اللہ علیہ نے علم سیاسیات اسلامی اور وحدت المسلمین کی اہمیت کے پیش نظر اسلامی نظام حکومت کے نفاذ کی تحریک کا بھرپور آغاز “تنظیم الاخوان پاکستان” کے نام سے اس وقت کیا جب اسلامی نظام کے نفاذ کا مطالبہ پاکستان میں دم توڑ رہا تھا۔ حضرت مولانا محمد اکرم اعوان رحمۃ اللہ علیہ ہی کی قیادت میں تنظیم الاخوان پاکستان نے خیمہ بستی کے ذریعے شرعی حدود میں رہ کرپرامن احتجاج کے ذریعے مکمل اسلامی نظام حکومت کے نفاذ کا مطالبہ کیا  اور اس کے نتیجے میں ہی معاشی نظام کو اسلامی کرنے کا آغاز کیا گیا اور تنظیم الاخوان پاکستان کے مطالبے پہ ہی دنیا میں پہلی مرتبہ اسلامی بینکنگ کی ابتداء ممکن ہوسکی۔

آپ کی زندگی کے بے شمار پہلو ہیں، جیسے الفلاح فائونڈیشن، صقارہ نظام تعلیم کے بانی و سرپرست اعلی بھی تھے۔ آپ بہت شفقت اور پیار کرنے والی شخصیت تھے اور دنیا کے پانچ سو بااثر ترین رہبروں کی فہرست میں شامل تھے۔ آپ کی وفات کے وقت دنیا بھر میں آپ کے سالکین کی تعداد دس لاکھ سے متجاوز تھی۔

آپ کے بیٹے “حضرت امیر عبدالقدیر اعوان مدظلہ العالی” نے آپ رحمۃ اللہ علیہ کی سرپرستی میں ہی آپ کے مشن کی باگ دوڑ میں بھرپور حصہ لینا شروع کیا تھا اور بعد ازاں آپ کے جانشین نامزد ہوئے۔ اب حضرت امیر عبدالقدیر اعوان ہی “شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ” اور “امیر تنظیم الاخوان”  ہیں اور “صقارہ نظام تعلیم و الفلاح فائونڈیشن و انجمن دارالعرفان” کے بھی “سرپرست” ہیں۔

تحریر : میاں قاسم
@MianQasimSehrai

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

تبصرہ کرنے سے پہلے آپ کا لاگ ان ہونا ضروری ہے۔

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو