جوبائیڈن نے مجھے فون کیا تو میں حیران تھا: علی زیدی

امریکی نو منتخب صدر جوبائیڈن کی ماحولیات کی ٹیم کے لیے منتخب ہونے والے پاکستانی نژاد علی زیدی کا کہنا ہے کہ نومنتخب صدر نے جب فون کیا تو میں حیران تھا بلاشبہ یہ میرے لیے ایک اعزاز کی بات ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز جوبائیڈن نے علی زیدی کا نام بطور ’ڈپٹی نیشنل کلائمیٹ ایڈوائزر‘ نامزد کیا ہے۔

ماحولیات سے متعلق وائٹ ہاؤس کے ڈپٹی کوارڈینیٹر علی زیدی نے اپنے حالیہ ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ نومنتخب صدر جو بائیڈن نے مجھے فون کیا تو میں حیران تھا، یہ میرے لیے اعزاز ہے۔

انہوں نے کہا کہ موسمیاتی بحران سے نمٹنے کے لیے ہمیں حکومت کے ایک مکمل طرز عمل کی ضرورت ہے، ایسے طرز عمل کی ضرورت ہے جو ملازمتوں کی حوصلہ افزائی اور انصاف کو فروغ دے۔

خیال رہے کہ پاکستان میں پیدا ہونے والے 33 سالہ علی زیدی اب تک وائٹ ہاؤس کے کسی بھی اعلیٰ عہدے پر فائز ہونے والے پہلے پاکستانی نژاد امریکی ہیں۔

علی زیدی پاکستان سے ہجرت کے بعد پنسلوینیا کے رسٹ بیلٹ میں پلے بڑھے ہیں۔ انہوں نے اوباما انتظامیہ کے کلائمیٹ ایکشن پلان کے مسودے اور اس پر عمل درآمد میں مدد اور پیرس معاہدے پر بات چیت میں بھی معاونت فراہم کی تھی۔

علی زیدی جینا میک کیرتھی کے نائب کی حیثیت سے خدمات انجام دیں گے، یہ جو بائیڈن انتظامیہ کے ڈومیسٹک کلائمیٹ ایجنڈے کو مربوط کرنے کے لیے اہم عہدہ سمجھا جاتا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو