کراچی میں بلڈر کے اغوا میں حاضر ڈیوٹی ڈی ایس پی کے ملوث ہونے کا انکشاف

گلستان جوہر، کراچی میں بلڈر کے اغوا میں ڈپٹی سپرٹنڈنٹ آف پولیس (ڈی ایس پی) سعید آباد راشد اقبال کے بھی ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔

اینٹی وائلنٹ کرائم سیل (اے وی سی سی) حکام کے مطابق پولیس افسران نے جعلی قومی احتساب بیورو (نیب) افسران بن کر بلڈر کو اغوا کیا تھا جس میں ڈی ایس پی راشد اقبال بھی ملوث نکلے۔

بلڈر کو اغوا کرنے کے بعد ڈی ایس پی راشد اقبال کے دفتر میں رکھا گیا تھا۔

اغوا میں پولیس موبائل بھی ڈی ایس پی راشد کی استعمال ہوئی تھی۔

اے وی سی سی نے ڈی ایس پی راشد اقبال کے ڈرائیور اور گن مین سمیت اب تک 6 افراد گرفتار کیے ہیں۔

گرفتار ہونے والوں میں ڈی ایس پی سمیت 4 پولیس اہلکار اور 2 دیگر افراد شامل ہیں۔

خیال رہے کہ گلستان جوہر، کراچی میں 2 دسمبرکو بلڈر کے اغوا کا واقعہ پیش آیا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو