کوئلے سے مزید توانائی پیدا نہیں کریں گے: وزیراعظم کا اعلان

وزیر اعظم عمران خان نے ماحول سے متعلق کانفرنس سے خطاب میں اعلان کیا ہے کہ کوئلے سے مزید توانائی پیدا نہیں کریں گے اور ہم نے کوئلے سے چلنے والے توانائی کے دو منصوبوں کو ختم کردیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے موسمیاتی تبدیلیوں پر پیرس معاہدے کی 5 ویں سالگرہ پر بین الاقوامی ورچوئل سمٹ سے خطاب کیا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کا ماحولیاتی آلودگی میں حصہ ایک فیصد سے بھی کم ہے تاہم یہ امر افسوسناک ہے کہ پاکستان ماحولیاتی آلودگی سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والا پانچواں ملک ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سب سے پہلے ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ موسمیاتی تبدیلیوں کے اثرات سے نمٹنے کیلئے قدرتی ذرائع بروئے کار لائیں، اس سلسلے میں ہم آئندہ تین سال میں 10 ارب درخت لگا رہے ہیں، ہم نے نیشنل پارک اور محفوظ علاقوں کی تعداد 30 سے بڑھا کر 45 کی ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ کوئلے کی بجائے پانی سے بجلی کی پیداوار پر توجہ دیں، ہم نے کوئلے سے چلنے والے توانائی کے دو منصوبوں کو ختم کردیا ہے جن سے 2600 میگاواٹ بجلی حاصل ہونا تھی، ہم نے ہائیڈرو الیکٹرسٹی پر منتقل کر دیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کلین انرجی کی جانب گامزن ہے، 2030ء تک مجموعی توانائی کے 60 فیصد ذرائع کو کلین انرجی اور 30 فیصد گاڑیوں کو بجلی پر منتقل کرنے کا ہدف ہے، پاکستان ماحولیاتی تبدیلی کے اثرات پر قابو پانے کیلئے تمام تر اقدامات کرے گا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو