روس سے دفاعی نظام خریدنے پر امریکا کا ترکی پر پابندیاں عائد کرنے کا فیصلہ

امریکا نے روس سے جدید فضائی دفاعی نظام ایس -400 خریدنے پر سخت ردعمل دیتے ہوئے ترکی پر اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق امریکی ذرائع ابلاغ کے تین عہدیداروں نے بتایا کہ روس سے جدید ایئر ڈیفنس سسٹم ایس -400 خریدنے پر ترکی پر اقتصادی پابندیاں عائد کی جائیں گی جس کا اعلان آج کیا جائے گا۔

امریکی ذرائع ابلاغ کے عہدیداروں نے رائٹرز کو مزید بتایا کہ ترکی کی دفاعی صنعتوں اور اس کے سربراہ اسماعیل ڈیمر پر پابندیاں عائد کی جائیں گی۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اس فیصلے سے جوبائیڈن کے لیے مشکلات پیدا ہوسکتی ہیں جو ترکی سے بہتر تعلقات کے خواہاں ہیں۔

دوسری جانب ایک سینیئر ترک عہدیدار نے رائٹرز کو بتایا کہ دونوں ممالک نیٹو اتحادی ہیں اور کئی محاذ پر ایک ساتھ کام بھی کیا ہے تاہم امریکی اقدام سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات پر اچھے اثرات مرتب نہیں ہوں گے۔

یاد رہے کہ ایس-400 سسٹم روسی ساختہ ایئر ڈیفنس سسٹم سابق سوویت یونین کی اہم عسکری باقیات میں سے ہے لیکن پرانی ٹیکنالوجی ہونے کے باوجود، یہ نظام اتنا طاقتور ہے کہ 300 کلومیٹر کی بلندی تک پرواز کرتے ہوئے کسی بھی طیارے کو بہ آسانی تباہ کرسکتا ہے۔

دوسری جانب ’’جوائنٹ اسٹرائیک فائٹر‘‘ کہلانے والا جدید امریکی لڑاکا طیارہ ایف 35 ہے جو کثیرالمقاصد ہونے کے ساتھ ساتھ بہت مہنگا بھی ہے۔ امریکا نے روس سے ایس-400 سسٹم خریدنے پر ترکی کے ساتھ ایف-35 معاہدہ منسوخ کرنے کی دھمکی بھی تھی جسے ترکی نے خاطر میں نہیں لایا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو