13 دسمبر کے جلسے کی دعوت دینے مریم نواز خود لاہور میں نکل پڑیں

مینار پاکستان پر پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے جلسے کے لیے مریم نواز کی قیادت میں عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں مسلم لیگ ن کی جانب سے ریلی نکالی گئی۔

نائب صدر ن لیگ مریم نواز کی سربراہی میں ریلی کا آغاز جاتی عمرہ سے ہوا، ریلی میں ن لیگ کی دیگر قیادت سمیت کارکنوں کی بڑی تعداد شریک تھی۔

ریلی یوحنا آباد، اور غازی روڈ سے ہوتی ہوئی نصیر آباد پہنچے گی، اس کے بعد ریلی مزنگ چونگی، لکشمی چوک اور گوالمنڈی سے ہوتی ہوئی لوہاری پہنچے گی، شیڈول کے مطابق مریم نواز داتا دربار پر حاضری بھی دیں گی اور اس دوران وہ شنگھائی برج، اچھرہ اور لوہاری میں خطاب کرکے شہریوں کو 13 دسمبر کے جلسے میں شرکت کی دعوت دیں گی۔

شیڈول کے مطابق ریلی رات 8 بجے کے بعد لوہاری کے علاقے میں اختتام پذیر ہوگی۔

گجومتہ میں خطاب کرتے ہوئے مریم نواز کا کہنا تھا کہ اس نااہل حکومت کو آخری دھکا دینے کے لیے تیار ہیں تو 13 دسمبر کو مینار پاکستان میں آپ کا انتظار کروں گی۔

اس سے قبل جاتی عمرہ سے روانہ ہوتے وقت مریم نواز کا کہنا تھا کہ آج فیصلہ کیا ہے پی ڈی ایم جماعتیں اپنی قیادت کے پاس استعفے جمع کرادیں، ہم نے باضابطہ اپنی جماعت کو استعفوں کے لیے نہیں کہا، مسلم لیگ ن 13 دسمبر کے بعد استعفے لے گی، لیکن ہمارے پاس استعفوں کے انبار لگ گئے ہیں۔

مریم نواز کاکہنا تھا کہ ڈی جے بٹ کی گرفتاری اور تشدد کی مذمت کرتے ہیں، عمران خان کا مقابلہ نواز شریف سے نہیں ڈی جے بٹ سے ہے اور نوازشریف کا مقابلہ عمران خان سے نہیں بلکہ انہیں لانے والوں سے ہے، نواز شریف نے کہہ دیا تھا ان کا مقابلہ بچوں اور سیاسی بونوں سے نہیں۔

واضح رہے کہ اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ نے 13 دسمبر کو لاہور میں جلسے کا اعلان کر رکھا ہے جس پر حکومت نے جلسے کے لیے سہولت فراہم کرنے والوں کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا اعلان کیا ہے جب کہ اب تک سینکڑوں کارکنان کے خلاف مقدمات بھی درج کیے جاچکے ہیں.

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو