بھارت کی جانب سے پاکستان مخالف پروپیگنڈے کیلیے ویب سائٹس چلانے کا انکشاف

بھارت کی جانب سے پاکستان مخالف پروپیگنڈے کے لیے ویب سائٹس چلانے کا انکشاف ہوا ہے۔

دنیا میں غلط معلومات پھیلانے کے حوالے سے ریسرچ کرنے والے بین الاقوامی ادارے ای یو ڈس انفو لیب نے انکشاف کیا ہے کہ بھارت ‘انڈین کرونیکلز ای یو’ کے نام سے پاکستان کے خلاف ایک ویب سائٹ چلا رہا ہے۔

بیلجیئم کی ای یو ڈس انفو لیب نے مودی سرکار کا بھانڈا پھوڑتے ہوئے انکشاف کیا کہ انڈین کرونیکلز ای یو نامی ویب سائٹ کے قیام کا مقصد بھارتی عوام تک پاکستان کے خلاف جھوٹی خبروں کا پروپیگنڈہ پہنچانا ہے۔

ادارے کا مزید کہنا ہے کہ ویب سائٹ پر بھارتی ارکان پارلیمنٹ صحافیوں کے نام سے مضامین دیتے ہیں جن کا مقصد پاکستان مخالف پروپیگنڈے کا پرچار ہے۔

ای یو ڈس انفو لیب کی تحقیق کے مطابق ’’ای یو کرانیکل ویب سائٹ‘‘ بھارتی پروپیگنڈا مہم میں نیا اضافہ ہے۔ مذکورہ ویب سائٹ پر شائع ہونے والے بہت سے کالم یورپی قانون سازوں اور صحافیوں کے ناموں سے غلط طور پر منسوب کیے جاتے ہیں، ایسے صحافی جو بظاہر موجود نہیں ہیں۔ پاکستان مخالف مواد کو دوسری ویب سائٹوں سے لے کر اسے بھارت میں دوبارہ شائع کیا جاتا ہے۔

بھارتی ادارہ سری واستو (Srivastava) ای یو کرانیکل ویب سائٹ کی پشت پناہی کر رہا ہے۔ یہ تنظیم بھارتی مفادات کو آگے بڑھاتی ہے جبکہ پاکستان اور چین کیخلاف منفی مواد کی تشہیر میں ملوث ہے۔

ای یو ڈس انفو لیب کے مطابق بھارتی نیوز ایجنسی اے این آئی ’’ای یو کرانیکل ویب سائٹ‘‘ کے مواد کی اپنے ملک میں تشہیر کرتی ہے جسے بزنس ورلڈ میگزین اور دیگر تشہیری ادارے دوبارہ شائع کرتے ہیں۔اس کے ذریعے پاکستان مخالف بیانے کو بھارت اور یورپی یونین میں فروغ دیا جاتا ہے۔

تحقیق کے مطابق ’’ای یو کرانیکل ویب سائٹ‘‘ کا اہم ہدف برسلز نہیں بلکہ بھارتی تشہیری ادارے ہیں۔ یہ بنیادی طور پر مرکزی دھارے میں شامل بھارتی اشاعتی اداروں کیلئے معلومات کے ذریعہ کا کام کرتی ہے۔

ای یو ڈس انفو لیب کے مطابق ای یو کرانیکل، ساؤتھ ایشیا ڈیموکریسی فورم، احباب گلگت بلتستان تنظیم اور(WESTT) کے ناموں سے کام کرنے والے سماجی اداروں کو منظم کرتا ہے جو یورپی پارلیمنٹ میں بھارتی اثر ورسوخ کو بڑھاوا دینے کے لیے کام کرتا ہے۔ اس کا مقصد یورپی پارلیمنٹ میں کشمیر پر بھارتی موقف کو آگے بڑھانا ہے۔

ای یو ڈس انفو لیب نے ’’ای یو کرانیکل‘‘ کو انڈین کرانیکل آپریشن کا نام دیا ہے۔ ای یو ڈس انفو لیب کی تحقیق کے مطابق بھارت 15 سال سے یورپی یونین اور اقوام متحدہ کو غلط مواد کی تشہیر کے ذریعے گمراہ کر رہا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو