رواں سال مقامی سطح پر 2 کروڑ سے زائد موبائل ڈیوائسز تیار کی گئیں

2018ء میں موبائل ڈیوائسزکی درآمد 17.2 ملین سے بڑھ کر سال 2019ء میں 63 فیصد اضافے کے بعد 28.02 ملین ہوگئی ہے۔

پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) کی جانب سے ڈیوائس آئی ڈینٹٹی فیکیشن رجسٹریشن اینڈ بلاکنگ سسٹم (ڈی آ ئی آر بی ایس) کے نفاذ کے بعد قانونی ذرائع کے ذریعے سال 2018ء میں موبائل ڈیوائسزکی درآمد17.2 ملین سے بڑھ کر سال 2019ء میں 63 فیصد اضافے کے بعد28.02 ملین ہوگئی ہے جبکہ سال 2020ء میں اب تک 32.83 ملین ڈیوائسز پاکستان میں درآمد کی جا چکی ہیں۔

پی ٹی اے کی جانب سے ڈی آئی آر بی ایس کے ذریعے اب تک ایسی ایک لاکھ 75 ہزار ڈیوائسز بلاک کی گئیں جن کی آئی ایم ای آئی چوری شدہ تھیں اس کے علاوہ اس نظام کی بدولت 24.3 ملین جعلی اور نقلی موبائل ڈیوائسز جبکہ 6 لاکھ 57 ہزار سے زائد کلوننگ و ڈپلیکیٹ شدہ آئی ایم ای آئی نشاندہی کے بعد بلاک کر دی گئی ہیں۔

اس کامیاب نظام کی بدولت مقامی سطح پر موبائل ڈیوائسز کی تیاری کیلیے 29 مراکز قائم کیے گئے ہیں جن کی بدولت 2019ء سے ابتک 2کروڑسے زیادہ ڈیوائسز تیارکی گئیں جن میں15 لاکھ فور جی سمارٹ فونز بھی شامل تھے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو