یورپ، برطانیہ بریگزیٹ کے بعد کے نئے تجارتی معاہدے پر متفق نہ ہوسکے

یورپ اور برطانیہ نے بریگزیٹ کے بعد نئے تجارتی معاہدے کے لیے مذاکرات میں دشواریوں کے باوجود انہیں جاری رکھنے پر اتفاق کیا ہے۔

جمعہ کے روز اس حوالے سے یورپین مذاکرات کار مشل بارنئیے اور ان کے برطانوی ہم منصب ڈیوڈ فراسٹ کے درمیان گفتگو رک گئی تھی۔ جس کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا کہ اس پر یورپین کمیشن کی صدر ارسلا واندر لین اور برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن خود بات کریں گے۔

جس کے بعد ہفتے کی شام دیر گئے جاری ہونے والے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ بڑے مسائل کے باوجود دونوں فریقین نے اس پر گفتگو جاری رکھنے پر اتفاق کیا ہے۔

اعلامیے کے مطابق بعد از بریگزیٹ تجارتی معاہدے کے کچھ نکات پر اتفاق ہونے کے باوجود 3 اہم نکات، لیول پلئینگ فیلڈ، گورننس اور فشریز پر بڑا اختلاف ہے۔

دونوں لیڈروں کے درمیان ٹیلیفون پر ہونے والی ایک گھنٹہ طویل گفتگو کے بعد مشترکہ اعلامیے جاری کیا گیا۔

گفتگو میں مزید کہا گیا کہ دونوں ممالک کے مذاکرات کار پیر کے روز یورپین دارالحکومت برسلز میں دوبارہ ملاقات کریں گے اور کوشش کریں گے کہ ان مسائل پر کوئی تصفیہ ممکن ہو سکے۔

اعلامیے میں یہ بھی واضح کردیا گیا ہے کہ اگر ان مسائل کو حل نہ کیا گیا تو کوئی معاہدہ ممکن نہیں ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو