اپوزیشن لیڈر کے پی صوبائی حکومت کے کورونا فنڈز میں کرپشن کے ثبوت سامنے لے آئے

خیبر پختونخوا اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور جمعیت علمائے اسلام ف کے مرکزی رہنما اکرم خان درانی نے پاکستان تحریک انصاف کی کرپشن منظر عام پر لانے کا دعویٰ کیا ہے۔

پشاور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے جے یو آئی ف کے رہنما اکرم خان درانی کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کا کرپشن فری پاکستان کا نعرہ تھا، آج بھی پی ٹی آئی والے قوم کو بتا رہے ہیں کہ پچھلے ادوار میں کرپشن ہوئی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی اور عمران خان نے پاکستان کو برباد کر دیا ہے، ہیلتھ کارڈ پروگرام میں پہلے اپنے لوگوں کو نوازا گیا۔

اکرم درانی کا کہنا تھا شوکت یوسفزئی نے کہا تھا کہ کورونا فنڈز میں کرپشن کے ثبوت لائیں، آج میں کورونا فنڈز میں کرپشن کے ثبوت لایا ہوں، میں نے 15 آئٹمز میں کرپشن کی بات کی، مجموعی طور پر 50 آئٹمز میں کرپشن ہوئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ کورونا وبا کے دوران قواعد و ضوابط کے خلاف ادویات خریداری گئیں، 49 کروڑ روپے بینکس میں منافع کے لیے رکھے گئے تھے، بغیر ٹینڈر کے سرجیکل دستانوں کی خریداری ہوئی، شوکت خانم ٹیم پر ہوٹل میں ایک کروڑ 58 لاکھ روپے خرچ کیے گئے۔

اکرم درانی کا کہنا تھا آڈٹ رپورٹ کے مطابق من پسند افراد کو ٹھیکے دیے گئے، 6 کروڑ، 55 لاکھ روپے استعمال ہی نہیں کیے گئے، ڈیڑھ کروڑ روپے کے مہنگے ماسک خریدے گئے، ایک کورونا ٹمپریچر آلہ 2227 روپے کا ہے، حکومت نے 26 ہزار میں خریدا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو