حقیقت سے قریب تر تھری ڈی چہروں کی خرید و فروخت انتہائی مقبول

اگر آپ اپنا چہرہ فروخت کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں تو جاپانی کمپنی آپ کی یہ خواہش بآسانی پوری کر سکتی ہے۔

ٹوکیو میں ماسک تیار کرنے والی جاپانی کمپنی اور اسٹور کیمینیا اوموٹو لوگوں کے چہروں کے حقوق خریدنے کا کاروبار کرتی ہے تاکہ انہیں ہائپر ریئلسٹک 3 ڈی پرنٹڈ ماسک کی صورت 40 ہزار ین (380 ڈالر) میں فروخت کیا جاسکے۔

کمپنی کے لوگوں کے چہرے کے حقوق خریدنے کے اعلان کے بعد سے ہی یہ پیش کش تیزی سے مقبول ہو گئی ہے۔

ماسک تیار کرنے والی کمپنی کے مطابق چہروں کے حقوق خریدنے کے بعد انہیں ہائپر ریئلسٹک 3 ڈی پرنٹڈ ماسک کی صورت دوبارہ تیار کر کے تقریباً 940 ڈالر میں فروخت کیا جاتا ہے۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ اگر کوئی ماسک کلائنٹ میں مقبول ہو جائے تو جس شخص کے چہرے کے پیش نظر ماسک تیار کیا گیا ہے اس شخص کو کمپنی منافع کا ایک فیصد بھی فراہم کرے گی۔

پروجیکٹ کا مقصد کیا ہے ؟

فوٹو :بشکریہ آڈیٹی سینٹرل

دیٹ فیس(That Face) نامی اس متنازع پروجیکٹ کا مقصد لوگوں کے چہروں کی خرید وفروخت کے خیال کو سائنس فکشن رخ فراہم کرنا ہے، منصوبے کے تحت 20 سال سے زیادہ عمر رکھنے والے ٹوکیو میں مقیم افراد اپنے چہرے کے حقوق فروخت کرنے کی درخواست دے سکتے ہیں لیکن کمپنی کی جانب سے منتخب کردہ افراد کو شناخت ظاہر کرنے کی اجازت نہیں دی جاتی۔

ماسک بنانے والے افراد بھی اس بات کے پابند ہوتے ہیں کہ وہ چہرہ فروخت کرنے والے شخص کی ذاتی معلومات ماسک بنانے کے عمل سے ہٹ کر کسی دوسرے کے ساتھ شیئر نہیں کریں گے۔

کمپنی کو چہروں کا انتخاب لاٹری کے ذریعے کرنا پڑا

فوٹو :بشکریہ آڈیٹی سینٹرل

ایک ایسے دور میں جہاں پرائیویسی اور پرسنل ڈیٹا کی اہمیت ماضی سے کہیں زیادہ اہم تصور کی جاتی ہے، منافع کے لیے اپنے چہرے کو فروخت کرنا عجیب سا تصور ہوتا ہے لیکن کمپنی کیمینیا اوموٹو کا کہنا ہے ان کی یہ پیش کش گزشتہ ماہ خاصی مقبول ہوئی ہے۔

کمپنی کی جانب سے لوگوں کے چہرے خریدنے کے منصوبے کا اعلان پہلے پہل اگرچہ صرف ٹوکیو تک محدود تھا لیکن لوگوں کی دلچسپی اتنی زیادہ تھی کہ کمپنی کو چہروں کا انتخاب لاٹری کے ذریعے کرنا پڑا۔

کمپنی کے مطابق سائنس فکشن اسٹوری اب ایک حقیقت بن چکی ہے اور اب تک کسی کو نہیں معلوم کے ایک جیسے چہروں سے بھری دنیا کا کیا حال ہو گا۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ ہم آپ کے چہرے خریدیں گے بھی اور انہیں آگے فروخت بھی کریں گے۔

واضح رہے کہ کیمینیا اوموٹو جاپان کی پہلی کمپنی نہیں ہے جو لوگوں کے چہروں کے حقوق فروخت کرتی ہے، 2011ء میں بھی REAL-f نامی کمپنی معاوضے کی صورت کسی بھی شخص کے تھری ڈی ماسک کی تیاری اور فروخت کا کام کرچکی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو