پاکستان کی معیشت کو بہتری کے لیے مزید وقت چاہیے: معاون خصوصی ریونیو

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے ریونیو ڈاکٹر وقار مسعود خان کا کہنا ہے کہ پاکستان کی معیشت نے ابھی پھلنا پھولنا شروع کیا ہے اور معیشت کو بہتری کے لیے مزید وقت چاہیے۔

ڈاکٹر وقار مسعود نے کہا آئی ایم ایف کو بتا دیا ہےکہ ہمیں پروگرام کی ضرورت ہے اور کورونا کی وجہ سے ہماری مجبوریوں کو سمجھا جائے لہٰذا آئی ایم ایف کا جائزہ مشن جلد پاکستان آئے گا. البتہ یہ طے ہونا باقی ہے کہ آئی ایم ایف کا جائزہ مشن پاکستان کا دورہ کرے گا یا ورچوئل جائزہ لے گا۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ پاکستان کی معیشت نے ابھی پھلنا پھولنا شروع کیا ہے اور معیشت کو بہتری کے لیے مزید وقت چاہیے، پاکستان کی معیشت سالانہ 13 ہزار ارب روپے ٹیکس ادا کرسکتی ہے لیکن ہم کہتے ہیں کہ سالانہ 9 ہزار ارب روپے ٹیکس ہی ادا کردیں تو بھی بہتری ممکن ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایف بی آر میں اصلاحات کے عمل کو مکمل کرنا پہلی ترجیح ہے جب کہ ہر قسم کی خرید و فروخت کی معلومات ٹیکنالوجی کی مدد سے ایف بی آر کو مل گئی ہیں۔

ڈاکٹر وقار مسعود کا کہنا تھا کہ مجھے میرے تجربے کی بنیاد پر حکومت نے اس عہدے پر تعینات کیا ہے، میں کسی عہدے کا خواہشمند نہیں لیکن کچھ دوستوں کے اصرار پر عہدہ قبول کیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو