کشمیر میں زمین کی ملکیت کے قانون میں ترامیم کا بھارتی اقدام جنگی جرم ہے، پاکستان

پاکستان نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی جانب سے زمینی ملکیت کے قوانین میں غیر قانونی ترمیم کو مسترد کردیا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہےکہ بھارتی اقدام اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے، پاکستان مقبوضہ کشمیر میں زمینی ملکیت کے قوانین میں غیرقانونی ترمیم مسترد کرتا ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ مقبوضہ کشمیر سلامتی کونسل کی قراردادوں اور عالمی قوانین کے تحت تسلیم شدہ تنازع ہے، بھارتی اقدام پاک بھارت دو طرفہ معاہدوں اور بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی ہے۔

ترجمان نے کہا ہےکہ مقبوضہ کشمیر میں زمین کی ملکیت کے قوانین میں ترامیم کا مقصد آبادیاتی ڈھانچے کو تبدیل کرنا ہے، یکطرفہ بھارتی اقدام جنیوا کنونشن کی خلاف ورزی اور جنگی جرم ہے، غیر قانونی بھارتی اقدامات سے مقبوضہ کشمیرکی متنازع حیثیت کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے مزید کہا ہےکہ بھارت جابرانہ اقدام سے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو نہیں دبا سکتا، اقوام متحدہ اور عالمی برادری بھارت کو غیر قانونی اقدام سے باز رکھے۔

خیال رہےکہ بھارت نے کشمیر کی علیحدہ حیثیت ختم کرنے کے بعد اب مقبوضہ کشمیرکی زمین غیر کشمیریوں کو خریدنے کی اجازت بھی دے دی ہے۔

مقبوضہ کشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے بھارتی اقدام کو کشمیریوں کے وسائل پر قبضے کی کوشش قرار دیا ہے جب کہ حریت کانفرنس نے بھارتی اقدام کے خلاف وادی میں ہفتے کو احتجاجی ہڑتال کی کال بھی دی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو