گندم کی امدادی قیمت اور درآمد میں اضافے کی منظوری

کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی نےگندم کی امدادی قیمت میں دو سو روپے اضافے کی منظوری دے دی ہے۔

مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ کی زیر صدارت کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس کے اعلامیہ کے مطابق کمیٹی نے تجاویز پر غور کرنے کے بعد گندم کی امدادی قیمت میں دوسو روپے اضافے کی تجویز منظورکرتے ہوئے گندم کی نئی امدادی قیمت 16 سو روپے فی من مقرر کر دی ہے۔

اس سے قبل گندم کی امدادی قیمت 14 سو روپے فی من مقرر کی تھی۔ کمیٹی کو ٹی سی پی کے زیر اہتمام گندم کی درآمد پر بھی تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ ٹی سی پی جنوری 2021ء تک دس لاکھ میٹرک ٹن گندم درآمد کرلے گا۔ وزارت فوڈ سکیورٹی کی درخواست پر گندم کی درآمد کا حجم 15 لاکھ میٹرک ٹن سے بڑھا کر 18 لاکھ میٹرک ٹن کرنے کی بھی منظوری دے دی گئی۔ روس سے حکومتی سطح پر مزید تین لاکھ ٹن گندم کی درآمد کا بھی فیصلہ کیا گیا۔

کمیٹی نے پاور ڈویژن کو رواں سال بجلی کی سبسڈی کیلئے مختص 140 ارب روپے میں سے پچاس فی صد جاری کرنے کی بھی منظوری دی۔ پاور ڈویژن کو دیئے جانے والے 65 ارب 80 کروڑ روپے بجلی پیدا کرنے والی کمپنیوں کو دیے جائیں گے۔ ای سی سی نے صنعتوں کو اضافی بجلی 12 روپے 96 پیسے فی یونٹ پر فراہم کرنے کی بھی منظوری دی جب کہ کے الیکٹرک کو اسکیم میں شامل کرنے کیلئے ذیلی کمیٹی قائم کردی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو