لفٹ کے اندر شیشے کیوں لگے ہوتے ہیں؟…

لفٹ استعمال کرتے ہوئے آپ نے کبھی غور کیا ہے کہ اس کے اندر شیشے کیوں لگے ہوئے ہوتے ہیں؟ اگر نہیں سوچا تو چلیں آج ہم آپ کو اس کی وجہ بتاتے ہیں۔

صنعتی دور کی ابتداء میں جب اونچی اونچی عمارتیں بننا عام ہوئیں تو ایسے میں ان عمارتوں میں لفٹ کی ضرورت پیش آئی اور اس دوران لفٹ استعمال کرنے والوں کو صرف ایک ہی شکایت ہوتی تھی کہ یہ لفٹیں بہت آہستہ چلتی ہیں جب کہ متعدد لوگ لفٹ میں سفر کرتے ہوئے ڈرتے تھے کہ کہیں یہ گِر نہ جائے۔

جب لفٹ بنانے والی کمپنیوں کو لوگوں کی جانب سے اس طرح کی شکایات مسلسل موصول ہونے لگیں تو کمپنی نے ایسی لفٹیں بنانے کا سوچا جو کہ تیز چلتی ہوں، لیکن تیز چلنے والی لفٹیں بنانا کمپنیوں کو بہت مہنگا پڑ رہا تھا۔

اس معاملے پر انجینئرز نے سوچا کہ یہ تو لوگوں کی سوچ ہے کہ لفٹ بہت آہستہ چلتی ہے، اور لفٹ کہیں گر نہ جائے، کیونکہ لفٹ میں لوگوں کے پاس کرنے کو کچھ نہیں ہوتا اور وہ بس آس پاس کی دیواروں کو ہی دیکھ رہے ہوتے ہیں، اس لیے ان کے دماغ میں اس طرح کے خیالات جنم لیتے ہیں۔

اس مسئلے کے حل کے لیے انجینئرز نے سوچا کہ کیوں نہ کچھ ایسا کیا جائے جس سے لفٹ میں سفر کرتے لوگوں کا دھیان بٹ جائے۔

اس طرح سے لفٹ بنانے والی کمپنیوں نے اس میں شیشے لگا دیے تاکہ لوگ لفٹ میں اندر آتے ہی ڈرنے یا یہ سوچنے کے بجائے کہ لفٹ ہلکی کیوں چل رہی ہے، اپنے آپ کو دیکھیں، اس طرح سے ان کا دھیان بٹ جاتا ہے۔

آپ نے بھی یہ ضرور نوٹ کیا ہوگا کہ لفٹ میں اندر موجود لوگ کبھی سامنے لگے شیشے میں دیکھ کر اپنے بال سیٹ کر رہے ہوتے ہیں تو کوئی اپنی ٹائی صحیح کر رہا ہوتا ہے۔

یہی وجہ ہے کہ لفٹ میں اندر جاتے ہی ان کا دھیان فوراً بٹ جاتا ہے اور انہیں ایسا لگتا ہے کہ وہ فوراً ہی اس فلور پر پہنچ گئے ہیں جہاں انہیں جانا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو