موجودہ حکومت کے پہلے سال قرضوں اور مالی خسارے میں اضافہ ہوا، ایشیائی ترقیاتی بینک

ایشیائی ترقیاتی بینک کا کہنا ہے کہ موجودہ حکومت کے پہلے سال زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں نمایاں کمی ہوئی جبکہ قرضوں اور مالی خسارے میں اضافہ ہوا ہے۔

اس ضمن میں ایشیائی ترقیاتی بینک نے رکن ممالک سے متعلق ڈیٹا رپورٹ جاری کر دی ہے۔ رپورٹ کے مطابق وفاقی حکومت نے پہلے سال کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 5 ارب 76 کروڑ ڈالر کم کیا۔سال 2018ء میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 19 ارب ڈالر سے زیادہ تھا جو کہ مالی سال 19-2018ء میں کم ہوکر 13 ارب 43 کروڑ ڈالر رہ گیا۔

رپورٹ کے مطابق مالی سال 2019ء میں معاشی شرح نمو صرف ایک فیصد رہی جبکہ مالی خسارے میں بھی اضافہ ہوا۔

سال 2018ء کی بہ نسبت زمبادلہ کے ذخائر 5 ارب ڈالر اضافے کے ساتھ 13 ارب 16 کروڑ ڈالر رہے۔ اس دوران ملک میں فی کس آمدن 1 لاکھ 98 ہزار روپے ریکارڈ کی گئی۔ سال 2018ء میں آمدن ایک لاکھ 81 ہزار 441 تھی۔

ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان میں بے روزگاری کی تازہ صورتحال کا ذکر نہیں کیا۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ 2018ء میں مہنگائی کی شرح 3.9 فیصد تھی جو 2019ء میں بڑھ کر 7.3 فیصد تک پہنچ گئی۔ ملکی آبادی کی شرح میں معمولی کمی ہوئی جبکہ سالانہ شرح 2 فیصد سے کم ہوکر 1.9 فیصد پر آگئی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو