63 فیصد پاکستانی کورونا کی ویکسین لگوانے کیلئے تیار نہیں: سروے

کورونا وائرس کی ویکسین آنے کی صورت میں 63 فیصد پاکستانی اسے استعمال کرنے سے انکار کررہے ہیں۔

یہ انکشاف بین الاقوامی تحقیقاتی ادارے آئی پی ایس او ایس پاکستان کے سروے میں سامنے آیا ہے جس کے مطابق 37 فیصد پاکستانی شہری ویکسین لگوانے کے لیے تیار ہیں۔

سروے کے مطابق 21 فیصد پاکستانی 6 ماہ میں کورونا ویکسین آنے کے لیے پُر امید ہیں اور 27 فیصد کا خیال ہے کہ ویکسین آنے میں مزید ایک سال لگ سکتا ہےجب کہ 23 فیصد کا کہنا ہے کہ اس میں 2 سے 3 سال لگ سکتے ہیں اور 9 فیصد کو لگتا ہے کہ کورونا کی ویکسین 3 سال سے بھی زیادہ عرصے بعد آئے گی۔

ویکسین آنے کی صورت میں 63 فیصد پاکستانیوں کا کہنا ہے کہ وہ اسے نہیں لگوائیں گے ۔

سروے میں 20 فیصد شہریوں نے رائے دی کہ کورونا وائرس کی ویکسین کبھی تیار نہیں کی جاسکے گی۔

خیال رہے کہ پاکستان میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 2 لاکھ 99 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے جب کہ 6 ہزار 350 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

دنیا بھر میں کورونا ویکسین کی تیاری کا کام زور و شور سے جاری ہے جب کہ روس نے ویکسین تیار کرنے کا دعویٰ بھی کیا ہے تاہم عالمی سطح پر اس پر شکوک و شبہات کا اظہار کیا گیا ہے۔

جبکہ چین نے اپنی تیار کردہ ویکسین کی رونمائی کی تیاری کر دی ہے اور فیکٹری بھی لگا لی ہے.

دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ کورونا ویکسین اکتوبر کے مہینے میں مارکیٹ میں آسکتی ہے۔ اس اعلان کو صدارتی انتخابات کے پیش نظر سیاسی بیان کی حد تک دیکھا جارہا ہے.

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو