کراچی میں برساتی پانی کے بہاؤ میں رکاوٹ بننے والی عمارتوں کو مسمار کرنے کا حکم

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کراچی میں بارش کے پانی کے بہاؤ میں رکاوٹ بننے والی تمام عمارتوں کو مسمار کرنے کا حکم دے دیا۔

کراچی میں بارش کے بعد کی صورت حال پر اجلاس ہوا، جس میں کمشنر کراچی نے شہر میں برساتی پانی جمع ہونے کے مقامات سے متعلق بریفنگ دی۔

وزیراعلیٰ سندھ نے ضلع جنوبی میں برساتی پانی کھڑا ہونے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ہدایت کی کہ 10 محرم پر جلوس کے راستے کلیئر ہونے چاہئیں، باتھ آئی لینڈ، شاہراہ فیصل اور کلفٹن کے مختلف بلاکوں سے پانی صاف کیا جائے۔

وزیراعلیٰ نے ہدایت جاری کی کہ بارش کے پانی کا بہاؤ رکنے کے تمام مقامات کی نشاندہی کرکے دیں، پانی کے بہاؤ میں سرکاری عمارت رکاوٹ ہو یا نجی اسے بلڈوز کریں، کراچی کو ٹھیک کرنا ہے اب چاہے کتنے ہی سخت اقدامات کیوں نہ کرنے پڑیں۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ مجھے تمام گلیاں صاف چاہئیں، لوگ کہتے ہیں حکومت نظر نہیں آتی، تمام ڈی سیز کراچی میں اپنے علاقوں کے نالوں کی دیکھ بھال کریں، نالے برساتی بہاؤ سے صاف ہوجاتے ہیں لیکن کیچڑ اور تھیلیاں نالے چوک کر دیتے ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بلدیہ عظمیٰ کراچی (کے ایم سی) کا اربن ڈیزاسٹر ریسپانس یونٹ بھی متحرک نظر نہیں آیا، کام میں مصروف سرکاری عملے کو جیکٹ پہنائی جائے تاکہ عوام کو معلوم ہوسکے کہ حکومت متحرک ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو