طویل عرصے تک حکمراں رہنے والے جاپانی وزیراعظم شینزو آبے مستعفی

جاپانی وزیر اعظم شینزو آبے نے اپنے عہدے کی دوسری مدت کے خاتمے سے ایک سال قبل خرابی صحت کی وجہ سے مستعفی ہونے کا اعلان کیا ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق جاپان کے وزیراعظم شینزو آبے نے کہا ہے کہ میں نہیں چاہتا کہ ملک اہم فیصلوں کا متقاضی ہو اور میں اپنی صحت کی خرابی کے باعث وقت نہ دے پا رہا ہوں، اس لیے میں نے مستعفی ہونے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

2012ء سے ملک کے سب سے بڑے عہدے پر براجمان شینزو آبے کی وزارت عظمیٰ کی موجودہ مدت کو اگلے برس مکمل ہونا تھا لیکن انہوں نے ایک سال قبل ہی اپنے عہدے سے استعفیٰ دیتے ہوئے اس خواہش کا اظہار کیا ہے کہ نئے وزیراعظم ملک کے لیے مفید ثابت ہوں گے۔

جاپانی وزیراعظم کچھ عرصے سے شدید علالت کا شکار رہے ہیں اور انہیں دو بار اسپتال میں داخل ہونا پڑا ہے۔ شینزو آبے لڑکپن سے ہی بڑی آنتوں کی سوزش اور السر کی بیماری ulcerative colitis میں مبتلا ہیں اور اسی کی وجہ سے ہی 2007 میں بھی وزارت عظمیٰ سے مستعفی ہوگئے تھے۔

وزیراعظم شینزو آبے کی بیماری کی شدت سے متعلق تازہ ترین صورت حال کا کچھ اندازہ نہیں تاہم قیاس ہے کہ بیماری کافی بڑھ چکی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو