پاکستان میں ہزاروں سال پرانا دنیا کا دوسرا قدیم ترین برگد کا درخت

سرگودھا کے علاقے مڈھ رانجھا کے قریب برگد کا تاریخی درخت پاکستان کا سب سے بڑا اور دنیا کا دوسرا قدیم درخت ہے اور اس کی تاریخ ہزاروں سال پر محیط ہے۔

دریائے چناب کے کنارے پر کھڑے اس کرشماتی درخت پر جہاں انواع و اقسام کے پرندوں نے گھونسلے بنا رکھے ہیں وہیں تواہم پرست لوگ اپنی منتیں مرادیں پوری کرنے کے لیے بھی اس درخت پر مختلف نوعیت کے فقرے تحریر کر دیتے ہیں۔

برگد کے اس درخت کے چر چے صرف پاکستان تک محدود نہیں ہیں بلکہ بہت سے ایشیائی اور مغربی ممالک کے لوگ اس کی شہرت سن کر اسے دیکھنے کے لیے کھنچے چلے آتے ہیں۔

علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ برگد کا یہ درخت پاکستان کا قیمتی ورثہ ہے، دیگر ممالک کے لوگ تو اس کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں، ہمیں بھی اس کے تحفظ کو یقینی بنانا چاہیے۔

کہتے ہیں کہ دنیا کا سب سے بڑا برگد کا درخت سری لنکا میں ہے اور اس کے بعد مڈھ رانجھا کا برگد کا یہ درخت دوسرے نمبر پر آتا ہے جب کہ بھارت کا درخت تیسرے نمبر پر ہے۔

علاقہ مکینوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ اگر ہم نے اپنے برگد کے اس درخت پر توجہ نہ دی تو بھارت کا درخت تیسر ے کی بجائے دوسرے نمبر پر آسکتا ہے۔

کئی صدیاں پانے والے اس تاریخی درخت کی نہ صرف حفاظت کرنے کی ضرورت ہے بلکہ اس جیسے مزید درخت بھی لگانے کی ضرورت ہے، اس درخت کے پودے نرسریوں میں عام دستیاب بھی ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو