صدارتی انتخابات میں فوج کی مداخلت سے متعلق تفتیش شروع

امریکی فوج ڈیموکریٹک نیشنل کنونشن کی ورچوئل تقریب میں دکھائی جانیوالی ایک وڈیو میں یونیفارم میں نظر آنے والے دو امریکی فوجی اہلکاروں کے بارے میں تفتیش کررہی ہے۔

متنازع ویڈیو نے نومبر میں متوقع صدارتی انتخابات سے قبل ایک بار پھر امریکی سیاست میں فوج کی مداخلت سے متعلق سوالات کھڑے کردیئے ہیں۔

امریکی فوج کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ اس قسم کی کسی بھی جانبدار، سیاسی تقریب میں وردی پہن کر شرکت کرنے کی ممانعت ہے۔

کسی بھی سیاسی امیدوار، مہم یا مقصد کی حمایت یا توثیق یا کفالت کے تاثر سے بچنے کے لئے امریکی فوج، سیاسی مہم اور انتخابات کے حوالے سے محکمہ دفاع کی واضح پالیسی کی پیروی کرتی ہے۔

دوسری جانب ڈیموکریٹک نیشنل کنونشن کی نمائندہ کا کہنا ہے کہ امریکی فوجیوں کا وردی میں ویڈیو میں نظر آنا دانستہ نہیں، غیرارادی طور پر ہوا۔

ڈیموکریٹک نیشنل کنونشن کی نمائندہ نے کہا کہ ویڈیو میں یونیفارم پہنے دو فوجی اہلکار وفود کے پیچھے کھڑے نظر آرہے ہیں۔ منگل کو ہونیوالی ورچوئل تقریب میں ہر ریاست اور علاقے نے ایک ایسے پس منظر کا انتخاب کیا جو علامتی طور پر ان کے لئے اہمیت کا حامل ہو۔

انہوں نے کہا کہ امریکی Samoa کے علاقے سے تعلق رکھنے والے وفود نے وردی میں ملبوس دو فوجی اہلکاروں کے سامنے کھڑے ہوکر اپنے علاقے کی ترجمانی کی۔ امریکا میں سب سے زیادہ فوجی اندراج اس ہی علاقے سے ہوتا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو