15لاکھ ٹن گندم امپورٹ کے عالمی ٹینڈرز کھل گئے

15 لاکھ ٹن گندم امپورٹ کیلیے ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان نے ٹینڈر کھول دیئے جب کہ مجموعی طور پر 9 غیر ملکی کمپنیوں نے بڈ پیش کی ہے۔

وفاقی حکومت کی جانب سے15 لاکھ ٹن گندم امپورٹ کیلیے ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان نے گزشتہ روز ٹینڈر کھول دیے ہیں۔ سب سے کم قیمت 233.85 ڈالر فی ٹن کی پیشکش سوئس سنگاپور نامی کمپنی نے 2 لاکھ ٹن گندم کیلیے دی ہے تاہم اس کمپنی نے یہ نہیں بتایا کہ وہ کس ملک کی گندم لیکر آئے گی۔ایگرو کارپ نے 2لاکھ ٹن گندم کیلیے 238.75 ڈالر اور بونجی ایس اے کمپنی نے 2 لاکھ ٹن گندم کیلیے 248 ڈالر فی ٹن قیمت کی پیشکش کی ہے۔

گرین ایکسپورٹ ایس اے نے 2 لاکھ ٹن گندم کیلیے 249.50 ڈالر جبکہ ہولبڈ لمیٹڈ نے 2 لاکھ ٹن کیلیے 249.92 ڈالر فی ٹن کی پیشکش کی ہے۔ آسٹن ایگرو انڈسٹریل نے 2لاکھ ٹن گندم کیلیے 250.40 ڈالر، گرین کارپ آپریشن نے 2 لاکھ 20 ہزار ٹن گندم امپورٹ کیلیے 255.50 ڈالر فی ٹن کی پیشکش کی ہے۔

سی ایچ ایس نے 2 لاکھ ٹن گندم کیلیے 259 ڈالر جبکہ ہاکن ایگرو نے 2 لاکھ ٹن گندم امپورٹ کیلیے 269.60 ڈالر فی ٹن قیمت کی پیشکش کی ہے۔ یہ تمام قیمتیں بحری جہاز کی کراچی یا گوادر بندرگاہ تک پہنچ کی حد تک محدود ہیں۔

گندم مارکیٹ سے منسلک ماہرین کے مطابق پاکستان کے نجی شعبہ نے چھ لاکھ ٹن اچھی کوالٹی گندم کے معاہدے 223 ڈالر سے لیکر 237 ڈالر فی ٹن تک کیے ہیں۔ قیمتوں کے نمایاں فرق اور بعض کمپنیوں کی جانب سے گندم لانے کا مقام نہ بتائے جانے کی وجہ سے ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان کیلیے نئی مشکلات پیدا ہو گئی ہیں اور اب ٹی سی پی حکام تمام کمپنیوں کے ساتھ مذاکرات کرکے 233.85 ڈالر قیمت پر مشترکہ اتفاق رائے پیدا کرنے کی کوشش کریں گے۔

اگر اتفاق رائے ہو گیا تو مکمل 15 لاکھ ٹن گندم امپورٹ ہوگی ورنہ کم قیمت والی 2کمپنیوں کی 4لاکھ ٹن گندم کی پیشکش منظور کر کے باقی کی 11 لاکھ ٹن گندم امپورٹ کیلیے نیا ٹینڈر جاری کیا جائے گا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو