کورونا کے سبب پاکستان کی برآمدات میں 24 فیصد کمی

مالی سال 2019-20ء کے دوران پاکستان کی برآمدات میں 24 فیصد کمی واقع ہوئی، حکومت کا کہنا ہے کہ برآمدات میں کمی کا بنیادی وجہ لاک ڈاؤن کا نفاذ ہے۔

اس حوالے سے اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ مالی سال کے دوران خطے کے ممالک افغانستان، چین، بنگلہ دیش، سری لنکا، بھارت، ایران، نیپال، بھوٹان اور مالدیپ کو کی جانے والی قومی برآمدات 3.738 ارب ڈالر تک کم ہوگئیں جبکہ مالی سال 2018-19ء کے دوران برآمدات کا حجم 4.678 ارب ڈالر رہا۔

اس طرح مالی سال 2019ء کے مقابلے میں گزشتہ مالی سال 2020ء کے دوران ہمسایہ ممالک کو کی جانے والی برآمدات میں 92 کروڑ ڈالر یعنی 24 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔

دوسری جانب درآمدات میں کمی کے باعث ہمسایہ ممالک سے کی جانے والی تجارت کے خسارے میں بھی کمی ہوئی ہے۔ ایس بی پی کے مطابق مالی سال کے دوران افغانستان کو کی جانے والی برآمدات 25.5 فیصد کی کمی سے 1.192 ارب ڈالر کے مقابلہ میں 888.913 ملین ڈالر تک کم ہو گئیں۔

چین کو کی جانے والی برآمدات بھی 10.5 فیصد کم ہو گئیں اور گزشتہ مالی سال 2020ء کے دوران برآمدات کاحجم 1.663 ارب ڈالر تک کم ہو گیا جبکہ مالی سال2019ء میں چین کو 1.858 ارب ڈالر کی برآمدات کی گئی تھیں۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق گزشتہ مالی سال کے دوران بھارت کو کی جانے والی قومی برآمدات میں سب سے زیادہ 90.8 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔ مالی سال 2019ء کے دوران بھارت کو 311.958 ملین ڈالر کی برآمدات کی گئی تھیں جو گزشتہ مالی سال 2020ء کے دوران 28.644 ملین ڈالر تک کم ہو گئیں۔

ایرانی برآمدات 2.942 ملین ڈالر کے مقابلہ میں 0.055 ملین ڈالر تک کم ہو گئیں جبکہ بنگلہ دیشی برآمدات کا حجم بھی 6.79 فیصد کی کمی سے 744.720 ملین ڈالر کے مقابلے میں 694.124 ملین ڈالر تک کم ہو گیا۔

مزید برآں سری لنکا کو کی جانے والی برآمدات میں گزشتہ مالی سال کے دوران 5.49 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی اور برآمدات کا حجم 303.761 ملین ڈالر کے مقابلہ میں 287.941 ملین ڈالر تک کم ہو گیا۔

دوسری جانب نیپال کو کی جانے والی ملکی برآمدات گزشتہ مالی سال میں 86.7 فیصد اضافہ سے 21.679 ملین ڈالر تک پہنچ گئیں جبکہ مالی سال 2019ء میں نیپال کو 2.872 ملین ڈالر کی برآمدات کی گئی تھیں۔

مالدیپ کو کی جانے والی برآمدات بھی 37.36 فیصد اضافہ سے 6.172 ملین ڈالر کے مقابلہ میں 8.478 ملین ڈالر تک بڑھ گئیں۔ اس طرح گزشتہ مالی سال کے دوران ہمسایہ ممالک کو کی جانے والی قومی برآمدات میں مجموعی طور پر 24 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو