سوڈان نے بھی اسرائیل سے تعلقات قائم کرنے کا ارادہ ظاہر کردیا

ترجمان سوڈانی وزارت خارجہ کے مطابق معاہدہ رواں برس یا اگلے برس کے اوائل تک ہوگا۔

ترجمان حیدر بداوی الصادق کا میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اسرائیل سے امن معاہدہ کرنے کے خواہشمند ہیں، تعلقات سوڈان کے مفاد میں قائم کیے جائیں گے۔

انھوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے حکام کے درمیان رابطے سے انکار نہیں ہے، عداوت جاری رکھنے کی کوئی وجہ نہیں، معاہدے سے اسرائیل اور سوڈان دونوں مستفید ہوں گے۔

واضح رہے کہ گذشتہ ہفتے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) اور اسرائیل کے درمیان تعلقات کے لیے معاہدہ طے پایا تھا، جس کے تحت دونوں ممالک کے درمیان سفارتخانہ کھولنے پر بھی اتفاق ہوا۔ معاہدے پر باضابطہ دستخط آئندہ چند ہفتوں میں ہوں گے۔
ترجمان سوڈانی وزارت خارجہ حیدر بداوی صدیق نے خرطوم میں میڈیا سےگفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم اسرائیل سے امن معاہدہ کرنے کے خواہش مند ہیں، یہ تعلقات سوڈان کے مفاد میں قائم کیے جائیں گے۔

ترجمان سوڈانی وزارت خارجہ کے مطابق دونوں ممالک کے حکام کے درمیان رابطے سے انکار نہیں ہے، امن معاہدہ رواں برس یا اگلے برس کے اوائل تک ہوگا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہمارے لیے اسرائیل سے عداوت جاری رکھنے کی کوئی وجہ نہیں، معاہدے سے اسرائیل اور سوڈان دونوں مستفید ہوں گے۔
واضح رہے کہ متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان باہمی تعلقات قائم کرنے کے لیے امن معاہدہ طے پایا ہے جس کے تحت اسرائیل مزید فلسطینی علاقے ضم نہیں کرے گا اور دو طرفہ تعلقات کے لیے دونوں ممالک مل کر روڈ میپ بنائیں گے۔

معاہدے کے مطابق امریکا اور متحدہ عرب امارات، اسرائیل سے دیگر مسلم ممالک سے بھی تعلقات قائم کرنے کے لیے مل کر کام کریں گے، اسرائیل سے امن کرنے والے ممالک کے مسلمان مقبوضہ بیت المقدس آ کر مسجد اقصیٰ میں نماز پڑھ سکیں گے۔

اماراتی نیوز ایجنسی کے مطابق اس معاہدے کے بعد یو اے ای اور اسرائیل کے درمیان سیکیورٹی اور توانائی شعبے میں تعاون کو فروغ دیا جائے گا۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق سرمایہ کاری، سیاحت، براہِ راست پروازوں، سیکیورٹی شعبوں میں معاہدے پر دستخط کیے جائیں گے۔

ٹیلی مواصلات، ٹیکنالوجی، توانائی، صحت، ثقافت، ماحولیات اور دیگر شعبوں سے متعلق معاہدے ہوں گے.

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو