سعودی عرب، یمن تنازع

عرب ملک یمن ستمبر 2014ء سے خانہ جنگی کا شکار ہے.

جب ایران نواز حوثی ملیشیا نے یمن کے دارالحکومت صنعا سمیت یمن کے بڑے حصے پر قبضہ کرلیا تھا. جس کے باعث یمنی صدر منصور ہادی کو بیرون ملک پناہ لینی پڑی تھی۔

یہ تنازع اس وقت مزید سنگین ہوگیا جب 2015ء میں سعودی عرب کی قیادت میں عرب ممالک کے عسکری اتحاد نے منصور ہادی کی حکومت بحال کرانے کے لیے یمن پر فوجی کارروائی کا آغاز کیا۔

رپورٹ کے مطابق 2015ء سے اب تک دونوں جانب سے طاقت کے استعمال کے نتیجے میں 60 ہزار سے زائد افراد ہلاک اور ہزاروں زخمی ہیں جب کہ لاکھوں افراد بے گھر ہوچکے ہیں۔

اقوام متحدہ کی جانب سے اس تنازعے کے نتیجے میں پیدا ہونے والی صورتحال کو بدترین انسانی بحران بھی قرار دیا جاچکا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو