اسٹیٹ بینک کو 10ملین ڈالر کی اوورسیز سرمایہ کاری کی اجازت کا اختیار

اسٹیٹ بینک کو پاکستانی کمپنیوں کو بیرون ملک 10 ملین ڈالر تک سرمایہ کاری کی اجازت دینے کا اختیار مل گیا جب کہ یہ فیصلہ گذشتہ ماہ اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) کے اجلاس میں کیا گیا۔

اسٹیٹ بینک ملکی کمپنیوں کو بیرون ممالک میں 5 ملین ڈالر تک سرمایہ کاری کی اجازت دینے کا مجاز تھا، 5 ملین ڈالر سے زائد کی سرمایہ کاری کے لیے مرکزی بینک کو ای سی سی سے اجازت درکار ہوتی تھی تاہم اب یہ حد بڑھا کر 10 ملین ڈالر کردی گئی ہے۔

دوران اجلاس وزیر منصوبہ بندی، ترقی و خصوصی اقدامات اسد عمر نے اس بات پر زور دیا کہ کاروبار کرنے میں آسانی کی ترویج کے لیے مرکزی بینک کے اختیارات پر نظرثانی کی ضرورت ہے اور مرکزی بینک کو 10 ملین ڈالر تک بیرون ممالک میں سرمایہ کاری کی اجازت دینے کا اختیار ہونا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ اس حد پر ہر 5 سال کے بعد نظرثانی کی جانی چاہیے۔ وزیراعظم کے مشیر برائے ادارہ جاتی اصلاحات ڈاکٹر عشرت حسین نے وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کے موقف کی حمایت کی، جس کے بعد ای سی سی نے اس تجویز کی حمایت کردی۔

یہ معاملہ ایسٹرن پروڈکٹس کی وجہ سے زیر غور آیا تھا، جس نے سعودی عرب میں ایک کمپنی کے 50 فیصد حصص خریدنے کے لیے 6 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کی اجازت مانگی تھی۔ ای سی سی نے کمپنی کو سرمایہ کاری کی اجازت دیدی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو