فیس میں 20 فیصد رعایت نہ دینے والے اسکولوں کے خلاف کارروائی کی ہدایت

سندھ ہائیکورٹ نے اسکول فیس میں 20 فیصد رعایت نہ دینے والے اسکولوں کے خلاف کارروائی کی ہدایت کردی۔

سندھ ہائیکورٹ میں نجی اسکولوں کی فیس میں رعایت سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی جس میں عدالت نے ڈی جی پرائیوٹ اسکولز کو ہدایت کی کہ جو اسکول فیس میں 20 فیصد رعایت نہ دیں ان کے خلاف کارروائی کی جائے۔

عدالت نے ہدایت کی کہ والدین فیس میں رعایت نہ دینے والے اسکولوں کی شکایت درج کرائیں اور شکایات پر ڈائریکٹر جنرل پرائیوٹ اسکولز منصوب صدیقی نجی اسکولوں کے خلاف کارروائی کریں، 20 فیصد رعایت کے قانون پر سختی سے عملدرآمد یقینی بنائیں۔

ڈی جی پرائیوٹ اسکولز نے عدالت کو فیسوں میں کمی نہ کرنے والے اسکولوں کے خلاف کارروائی کی یقین دہانی دی۔

دورانِ سماعت سندھ حکومت کی جانب سے بھی 20 فیصد رعایت پر کوئی اعتراض نہیں کیا گیا۔

بعدازاں سندھ ہائیکورٹ نے فیسوں میں کمی کی عملدرآمد کی رپورٹ 20 دن میں پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے تمام فریقین کی رضامندی کے بعد درخواست نمٹا دی۔

خیال رہے کہ حکومت سندھ نے سندھ کورونا ریلیف آرڈیننس جاری کیا تھا جس کی منظوری 15 مئی کو گورنر سندھ نے دی تھی۔

مسودے کے مطابق نجی اسکولوں پر 20 فیصد ٹیوشن فیس کی کٹوتی لازم قرار دی گئی ہے. اس کٹوتی کو کسی اور مد میں یا مخصوص مدت گزرنے کے بعد بھی وصول نہیں کیا جائے گا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو