ہائیڈروکسی کلوروکوئن استعمال کرنیوالے 100 سے زائد کووڈ مریضوں کی ہلاکت کا انکشاف

امریکا میں رواں برس کی پہلی ششماہی میں کورونا وائرس کے علاج کے لیے استعمال کی جانے والی ملیریا کی دوا ہائیڈروکسی کلوروکوئن استعمال کرنے والے 100 سے زائد کووڈ 19 کے مریضوں کی اموات کا انکشاف ہوا ہے۔

یہ انکشاف امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے) کے رپورٹنگ سسٹم کا جائزہ لینے والے جرنل ملوایکی سینشیل نے مختلف رپورٹوں کی بنیاد پر کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق رواں برس کی پہلی ششماہی میں 293 اموات کا تعلق ہائیڈروکسی کلوروکوئن سے تھا، اور اس کے برانڈ کا نام پلیکوئنل تھا جو کلوروکوئن کی سسٹر میڈیسن ہے۔

یہ تعداد 2019ء کی پہلی ششماہی کے مقابلے میں زیادہ ہے، اس دوران 75 اموات سامنے آئی تھیں۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مارچ میں ملیریا کی دوا کلورو کوئن Chloroquine اور ہائیڈروکسی کلورو کوئن Hydroxychloroquine کو کورونا کے علاج کے لیے استعمال کرنے کی تجویز دی تھی اور ان کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس کے علاج اور ویکسین کی تیاری کے لیے سرخ فیتے کی رکاوٹیں ختم کر دی ہیں۔

دوسری جانب امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے کلوروکوئن اور ہائيڈروکسی کلوروکوئن کو ہنگامی حالت میں استعمال کرنے کا اجازت نامہ منسوخ کر دیا تھا۔

مگر ملیریا کے خلاف استعمال کی جانے والی یہ دوا امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کورونا سے بچنے کے لیے نہ صرف خود استعمال کرتے رہے بلکہ ا س کی کھل کر وکالت کرتے رہے لیکن ایف ڈی اے نے نئے شواہد کی بنا پر واضح کیا تھا کہ اس بات پر یقین کا جواز ہی نہیں کہ کلوروکوئن کورونا وائرس کے خلاف کارگر ثابت ہو سکتی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو