سبزیوں، پھلوں و دیگر قدرتی غذاؤں کے طبی فوائد

سبزیوں کے طبی فوائد

1۔ ادرک Ginger
۱۔ کاسر ریاح، ہاضم اور امراض معدہ میں مفید۔
۲۔ ریامی دردوں مثلا گنٹھیا، فالج میں اس کا استعمال مفید ہے، درد پشت ،درد کمر میں بیرونی طور پر تیل میں جلا کر یا دیگر ادویہ کے ہمراہ تیل بنا کر مالش کی جاتی ہے۔
۳۔ ادرک گردے اور مثانہ کو طاقت دیتی ہے۔
۴۔بچوں کی کھانسی کی صورت میں ادرک کا عرق شہد میں ملا کر دینے سے کھانسی کا خاتمہ ہو جاتا ہے۔
۵۔ ہاضمے دار چورن بنانے کے لیے سونٹھ (خشک ادرک) اور اجوائن دیسی لے کر آب ادرک میں تر کریں اور پھر سایہ میں خشک کریں اور نمک ملاکر سفوف بنالیں، حسب ضرورت استعمال کریں۔

2۔ بند گوبھی Cabbage
۱۔ یہ بلغم بننے کو روکتی ہے۔
۲۔ اس کا بطور سلاد استعمال کولیسٹرول کے لیے بے حد مفید ہے۔
۳۔ اس کا استعمال موٹاپے کو کم کرتا ہے۔

3۔ پودینہ Pepper mint
۱۔ چہرے کے داغ دھبوں کو دور کرنے کے لیے پودینہ کو سرکہ میں پیس کر بطور لیپ استعمال کرنا مفید ہوتا ہے۔
۲۔ پودینہ کا استعمال مقوی معدہ ہوتا ہے۔
۳۔جسم سے ریاح کو خارج کرتا ہے۔
۴۔ پودینہ کو انجیر کے ہمراہ جوشاندہ کی صورت میں استعمال کرنے سے سینہ اور پھیپھڑوں سے غلیظ مواد آسانی سے خارج ہو جاتا ہے اورکھانسی دمہ، درد سینہ میں مفید ہے۔
۵۔ بھوک لگاتا ہے۔
٦۔ پودینہ پیشاب آور ہے۔
۷۔ اسہال میں پودینے کا استعمال مفید ہے۔

4۔ پیاز Onion
۱۔ تلی کے ورم کا سب سے کامیاب علاج پیاز کا استعمال ہے۔
۲۔ خارش میں پیاز کا رس ملنے سے آرام ہوتا ہےاور خارش دور ہو جاتی ہے۔
۳۔ پیاز کے عرق میں شہد کا اضافہ مقوی باہ ہوتا ہے۔
۴۔ پیاز کو مقوی و محرک کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

5۔ پیٹھا White Pumpkin
۱۔ بلڈپریشر اور گرمی کے لیے مفید ہے۔
۲۔ دماغی کام کرنے والوں کے لیے پیٹھے کا حلوہ بے حد مفید ہے۔
۳۔ یہ ہڈیوں کی پرورش کرتا ہے اور نیند لاتا ہے۔
۴۔ پیشاب کی جلن کو ختم کرنے میں پیٹھا اکسیر کا درجہ رکھتا ہے۔

6۔ سہانجنہ Moringa
۱۔ بھوک لگاتا ہے۔
۲۔ وجع مفاصل اور درد کمر میں مفید ہے۔
۳۔ گلے کی سوزش کی صورت میں اس کا استعمال مفید ہے۔

7۔ توری۔ laActangu
۱۔ قبض کشا ہے۔
۲۔ بواسیر کو درست کرتی ہے۔
۲۔ حرارت کو تسکین دیتی ہے۔
۴۔ مسکن حرارت اور مدر بول ہے۔

8۔ ٹماٹر Tomato
۱۔ ٹماٹر خون کو صاف کرتا ہے۔
۲۔ جسم کی خشکی کو دور کرتا ہے۔
۳۔ وہم اور وحشت کو ختم کرتا ہے۔
۴۔ طبیعت کو فرحت دیتا ہے۔
۵۔ بچوں کے لیے اس کا جوس نہایت مفید ہے۔
٦۔ گردہ کی پتھری والے مریض ٹماٹر استعمال نہ کریں۔

9۔ چقندر Beet Root
١۔ اعصاب کو قوت بخشتا ہے اور جسم کو طاقتور بناتا ہے۔
٢۔ سر میں سکری ہو تواس کے پتے ابال کر سر دھونےسےدور ہو جاتی ہے۔
٣۔ اس کےپتےاگر مہندی کے ہمراہ رگڑ کر لگائیں تو سر کے بال نرم و ملائم ہو جاتے ہیں، گرتے بال رک جاتے ہیں۔
٤۔ مادہ تولید گاڑھا کرتا ہے۔
٥۔ جوڑوں کے درد میں چقندر نہایت مفید ہے۔

10۔ دھنیا Coriender
١۔ پیاس کو روکتاہے اورقےکو ختم کرتا ہے، مقوی معدہ ہے، معدےکا صفرا دور کرتاہے۔
٢۔ دل و دماغ کو ٹھنڈک اورطاقت دیتاہے۔
٣۔ تبخیر معدہ کے لیے پانچ تولہ مغز بادام ، پانچ تولہ سونف اور اڑھائی تولہ دھنیا ہمراہ دیسی تولہ چینی کے سفوف بنا کر ایک تولہ کھانا کھانے کے بعد کھانےسے مرض دورہوتاہے اوردماغ کو قوت ملتی ہے۔
٤۔ نزلہ، زکام، سر درد، سر چکرانے کی صورت اطریفل کثیر کا استعمال مفید ہے۔

11۔ شلجم Turnip
۱۔ جسم کو طاقتور بناتا ہے، بدن کی کمزوری کو دور کرتا ہے۔
۲۔ خشک کھانسی میں بے حد مفید ہے۔
۳۔ ضعف جگر،گنٹھیا، ضعف مشانہ میں شلجم بے حدمفید ہے۔

12۔ کریلا Hairy Mardica
۱۔ یہ مغوی معدہ اور قاتل کرم شکم ہے۔
۲۔ کریلا صفرا اور بلغم کا مسہل ہے۔
۳۔ اعصابی طاقت دیتا ہے۔
۴۔ ذیابیطس کے مریضوں کے لیے مفید ہے۔

13۔ گاجر Carrot
۱۔ کچی گاجر کھانے سے بینائی میں اضافہ ہوتا ہے۔
۲۔ گاجر سیب کا بھی متبادل سمجھی جاتی ہے۔
۳۔ گاجر دل کے امراض میں مفید ہے۔
۴۔ گاجر مفرح اور مقوی اعضائے رئیسہ ہے۔

14۔ لہسن Garlic
۱۔ یہ خوراک کو جلد ہضم کرتا ہے۔
۲۔ پیشاب اور حیض جاری کرتا ہے۔
۳۔ انار دانہ، پودینہ، ادرک اور لہسن کی چٹنی بہت سے طبعی فوائد رکھتی ہے۔
۴۔ بلند فشار خون میں اس کا استعمال نہایت مفید ثابت ہوتا ہے۔

15۔ سرخ مرچ Red Pepper
۱۔مرچ بھوک لگاتی ہے اور ریح کو جسم سے خارج کرتی ہے۔
۲۔مرچ وبائی امراض کا سب سے بڑا تریاق ہے۔
۳۔بلغمی امراض والوں کے لیے مرچ بہت مفید ہے اور کھانے کو ہضم کرتی ہے۔
۴۔حیض اورپیشاب کی بندش کو کھولتی ہے۔

16۔ مولی Radish
۱۔ مولی نمک کے ساتھ کھانے سے جگر کی اصلاح ہوتی ہے۔
۲۔ مولی کا مستقل استعمال گردہ اور مثانہ میں موجود پتھری کو ریزہ ریزہ کر کے ہمیشہ کے لیے جسم سے خارج کردیتا ہے۔
٣۔ یرقان کے مرض میں مولی کے پتوں کا رس نکال کر چینی ملاکر پلانے سے مرض ختم ہوجاتا ہے۔
٤۔ مسوڑھوں کے امراض پائیوریا اور دانتوں کی مختلف بیماریوں میں اسکا استعمال مفید ہوتاہے۔

17۔ میتھی
۱۔ میتھی کا استعمال اعصاب کو طاقت دیتا ہے۔
۲۔ میتھی کے جو شاندہ میں شہدملا کر پلانے سے دمہ میں بے حد فائدہ ہوتا ہے۔
۳۔ تخم میتھی کو پیس کر چہرے پر لگانے سے رنگ نکھر جاتا ہے۔
۴۔ میتھی کے بیجوں کو رگڑ کر اس پانی سے ہفتہ میں دو بار سر دھونے سے سر کے بال لمبے ہو جاتے ہیں اور گرنے سے بالکل بندہو جاتے ہیں۔

18۔ اجوائن دیسی
۱۔ اجوائن دیسی کھانا ہضم کرتی ہے اور بھوک بڑھاتی ہے۔
۲۔ کاسر ریاح ہے، فساد بلغم اور اپھارہ کو دور کرتی ہے۔
۳۔ گردہ، مثانہ کی پتھری کو توڑتی ہے۔
۴۔ کالی کھانسی کے مرض میں اجوائن کا پانی نہایت مفید ہے۔
۵۔ دمہ کے مریض میں اجوائن خراسانی کا استعمال نہایت فائدہ مند ہوتا ہے۔
٦۔ تمام اقسام کے نزلوں میں مفید ہے۔
۷۔ ایک ماشہ اجوائن شہد میں ملا کر کھانے سے پرانے درد سر، عرق النساء اور نقرس میں مفید ہے۔

19۔ اسپغول
۱۔ آنتوں کے زخموں، مروڑ ہونے کی حالت میں بے حد مفید ہے۔
۲۔ اس میں شربت صندل ایک چمچ ڈال کر پلانا مفید ہوتا ہے۔
۳۔ قبض کشا ہے، آنتوں میں پھسلن پیدا کرتی ہے، رات سوتے وقت ایک گلاس دودھ میں ایک تولہ اسپغول کا استعمال دائمی قبض میں بھی مفید ہے۔

20۔ الائچی خورد
۱۔ مقوی معدہ ہے، معدہ کی رطوبت کو خشک کرتی ہے۔
۲۔ قے، متلی اور منہ کی بدبو کو دو ر کرتی ہے۔
۳۔ آنتوں کی مختلف بیماریوں میں بے حد مفید ہے۔

21۔ الائچی کلاں
۱۔ بھوک بڑھاتی ہے۔
۲۔ مفوی معدہ ہے۔
۳۔ گرم مصالحہ میں استعمال ہوتی ہے۔
۴۔ مفرح قلب ہوتی ہے۔

22۔ املی
۱۔ دل و معدے کو قوت دیتی ہے۔
۲۔ جگر کی خرابی اور یرقان میں املی دو تولہ ،تخم کانسی سات ماشہ ، گل نیلوفردو تولہ اور مکوبھگو کر پینا بہت مفید ہے۔
۳۔ سوزاک میں املی کا پانی پینا مفید ہوتا ہے۔

23۔ انار دانہ saeed pomegranate
۱۔ انار دانہ ہاضم ہے۔
۲۔ بھوک لگا تا ہے۔
۳۔ مفوی معدہ ہے۔
۴۔ پودینے کی چٹنی بنانے میں انار دانہ ایک اہم جز ہے۔
۵۔ پیٹ درد میں انار دانہ پانی میں رگڑ کر نمک اور کالی مرچ حسب ضرورت ملا کر پینے سے درد فورا دور ہو جاتا ہے۔

24۔ انڈہ Egg
۱۔ انڈہ خون پیدا کرتا ہے۔
٢. کمزور مریضوں کی بہتر ین غذا ہے۔
٣. انڈہ لحمیات کا بہترین ماخذ ہے۔

25۔ تیز پات
۱۔ ریاح کو تحلیل کرتا ہے۔
۲۔ معدہ کی اصلاح کرتا ہے۔
۳۔ مفرح دماغ و قلب ہے۔
۴۔ گوشت کو گلانے کے لیے ہنڈیا میں دو پتے تیز پات کے ڈال دیے جائیں تو گوشت گل جاتا ہے ، سالن خوش ذائقہ تیار ہو جاتا ہے۔

26۔ دار چینی
۱۔ خوشبو دار او ر دافع تعفن ہے۔
٢۔ کھانسی اور دمہ میں دار چینی کو ہم وزن شہد میں ملا کر چٹانے سے فائدہ ہوتا ہے۔
۳۔ نزلہ اور زکام میں دار چینی کا سفوف ایک ماشہ صبح و شام ہمراہ پانی استعمال کرنا مفید ہے۔

27۔ دہی Yogurt
۱۔ دہی معدے کی گرمی کو دور کرتا ہے۔
۲۔ منہ میں نکلے ہوئے چھالوں کے لیے مفید ہے۔
۳۔ دہی پیاس کو تسکین دیتی ہے۔
۴۔ معدے اور آنتوں کے ورم اس کے استعمال سے دور ہو جاتے ہیں۔

28۔ زعفران saffron
۱۔ حواس اور دل ودماغ کو قوت دیتا ہے۔
۲۔ جگر کی اصلاح کرتا ہے۔
۳۔ چہرے کے رنگ کو نکھارتا ہے۔

29۔ زیتون Olive
۱۔ زیتون قبض کشا ہے۔
۲۔ پتھری کو توڑتا ہے ، پیشاپ کو جاری کرتا ہے۔
۳۔ روغن زیتون کا مستقل استعمال السر ( (ulcerسے نجات کا سبب ہے۔

30۔ زیرہ سفید
۱۔ زیرہ سفید کو لیموں کے رس میں رگڑ کر کھانے سے متلی فورا دور ہو جاتی ہے۔
۲۔ ریاح اور ورم کو تحلیل کرتا ہے۔
۳۔ آنتوں کو طاقت دیتا ہے۔

31۔ زیرہ سیاہ
۱۔ زیرہ سیاہ کا استعمال چہرے کا رنگ نکھارتا ہے۔
۲۔ پیشاب اور حیض کو جاری کرتا ہے۔
۳۔ بلغم کو دور کرتا ہے۔
۴۔ ریاح اور ورموں کو تحلیل کرتا ہے۔

32۔ ساگودانہ SAGO
۱۔ اسہال ، پیچش اور بخار کے لیے بہترین غذا ہے۔
۲۔ بدن کو فربہ بناتا ہے۔
۳۔ جسم کو طاقت حاصل ہوتی ہے۔
۴۔ ریاح اور ورموں کو تحلیل کرتا ہے۔

33۔ سرکہ VINIGAR
۱۔ دماغ کو قوت دیتا ہے۔
۲۔ کھانا ہضم کرتا ہے اور بھوک لگاتا ہے۔
۳۔ طحال کے امراض میں جامن کا سرکہ بے حد مفید ہے۔
۴۔ پیٹ کے کیڑوں کو مارتا ہے۔
۵۔ پیٹ کے اپھارہ میں اس کا استعمال بے حد مفید ہے۔
۶۔ سرکہ پیشاب آور اور مصفی خون ہے۔

34۔ سونف FANNEL SEEDS
۱۔ سونف ہاضم اور کاسر ریاح ہوتی ہے۔
۲۔ پیشاب اور حیض کو جاری کرتی ہے۔
۳۔ مغوی معدہ ہے۔
۴۔ بلغم کو دور کرتی ہے۔
۵۔ بادی کو دور کرتی ہے۔
۶۔ ہر قسم کے سر درد کے لیے سونف دس تولہ، مصری دس تولہ باریک پیس کر سفوف بنا لیں تین تولہ سفوف کا استعمال مقوی دماغ ہے۔
۷۔ بینائی اور دماغ کی طاقت کے لیے سونف اور مصری ہمراہ بادام رات کو دودھ کے ساتھ مفید ہے۔

35۔ سیاہ مرچ BLACK PEPPER
۱۔ یہ ریاح کو خارج کرتی ہے ،محلل اورام ہے اور کاسر ریاح ہے۔
۲۔ پٹھوں ،معدہ اور جگر کو قوت دیتی ہے۔
۳۔ زہر کو جسم سے قے کے ذریعے سے نکالتی ہے۔
۴۔ غذاؤں کو لطیف بناتی ہے۔
۵۔ غذائی اشیاء کے نقصان دہ اثرات کو دور کرتی ہے۔
۶۔ دمہ ،کھانسی ،زکام، بدہضمی میں اس کا استعمال مفید ہے۔
۷۔ اس میں فولاد وٹامن بی اور ای شامل ہوتے ہیں۔
۸۔ منہ کی بدبو ختم کرتی ہے۔
۹۔ گلے کی خراش میں کالی مرچ منہ میں چبانے سے افاقہ ہوتا ہے۔

36۔ شہد HONEY
۱۔ شہد حرارت عزیزی کو قوی کرتا ہے۔
۲۔ امراض قلب میں بے حد مفید ہے۔
۳۔ پھیپھڑوں کی صفائی کرتا ہے۔
۴۔ دماغی تھکن کی صورت میں ایک گلاس نیم گرم پانی میں ایک چمچ ملا کر پینے سے تھکن فورا دور ہو جاتی ہے۔

37۔ گڑ JAGGERY
۱۔ کھانے کو ہضم کرتا ہے۔
۲۔ طبیعت کو نرم کرتا ہے۔
۳۔ بلغم کو چھانٹتا ہے۔

38۔ گھی
۱۔ گھی بدن کو طاقت دیتا ہے۔
۲۔ دردوں اور ورموں کو تحلیل کرتا ہے۔

39۔ لونگ CLOVES
۱۔ لونگ مفرح اور دل و دماغ کو طاقت دیتی ہے۔
۲۔ اعضائے رئیسہ کو قوت اور فرحت بخشتی ہے۔
۳۔ منہ کی بدبو دور کرتی ہے۔
۴۔ لونگ ،سونٹھ ،جائفل ، حرمل کو روغن کنجد میں پکا کر ملنا جوڑوں کے درد کے لیے مفید ہے۔

40۔ لیموں LEMON
۱۔ دافع صفراء ہے۔
۲۔ تازہ لیموں کی شکنجی بخار میں افاقہ دیتی ہے۔
۳۔ وزن کم کرنے کے لیے لیموں کا رس ہمراہ دو چمچ شہد نہار منہ بہت مفید ہے۔
۴۔ لیموں میں فاسفورس ،فولاد ، پوٹاشیم اور کیلشیم کی وافر مقدار کے ساتھ وٹامن بی اور سی بھی موجود ہوتا ہے۔

41 مکھن۔ BUTTER
۱۔ آواز کو صاف کرتا ہے۔
۲۔ قبض کشا ہوتا ہے۔
۳۔ مقوی دماغ ہوتا ہے۔
۴۔ جلد کو نرم کرتا ہے۔
۵۔ مکھن اگر شکر اور خشخاش ملا کر کھایا جائے تو بدن کو فربہ کرتا ہے۔

42۔ مہندی
۱۔ مہندی مصفی خون ہے۔
۲۔ الرجی میں اس کا استعمال نہایت مفید ہے۔

43۔ نمک SALT
۱۔ نمک دانتوں کا عمدہ منجن ہے۔
2۔ خارش کے مریض کے لیے نیم کے پتوں میں نمک اور پانی ملا کر پہلے جوش دیں اور پھر اس پانی میں غسل دیں خارش دور ہو جائے گی۔
۳۔ نمک کے غرارے کرنے سے گلے کی خراش دور ہو جاتی ہے۔
۴۔ کھانے کو لذیذ بناتا ہے۔
۵۔ معدہ اور آنتوں کو صاف کرتا ہے۔

44۔ نوشادر CHLORIDE AMMONIUM
۱۔ پیشاب آور ہے

45۔ ہلدی TURMERIC
۱۔ ورموں کو تحلیل کرتی ہے۔
۲۔ خون کو صاف کرتی ہے۔
۳۔ یرقان میں اس کا استعمال نہایت مفید ہے۔
۴۔ چوٹ لگنے یا موچ آنے کی صورت میں ہلدی اور چونا ہم وزن رگڑ کر لیپ کرنا مفید ہے۔
۵۔ چہرے کے داغ دھبوں کو دور کرنے کے لیے ہلدی میں سرسوں کا تیل ملا کر لگانے سے چہرے کا رنگ نکھر آتا ہے۔
۶۔ ہلدی، سونٹھ اور چینی ملا کر کھانے سے جوڑوں کا درد دور ہو جاتا ہے۔
۷۔ بلغم کو دور کرتی ہے ، جگر اور سینے کو صاف کرتی ہے۔

46۔ ہینگ ASEFPIDTOD
۱۔ ہاضم ہے، بھوک بڑھاتی ہے۔
۲۔ ریاح اور اورام کو تحلیل کرتی ہے۔
۳۔ پیشاب اور حیض کو جاری کرتی ہے۔
۴۔ دماغی اور اعصابی امراض میں مفید ہے۔
۵۔ ہینگ کو ہمیشہ بریاں کر کے استعمال کرنا چاہیے۔
۶۔ بدن میں گرمی پہنچاتی ہے۔
۷۔ ہینگ کھانے سے پیٹ کا اپھارہ بالکل ٹھیک ہو جاتا ہے۔
۸۔ ماش کی دال ،اروی کچالو میں ہینگ ڈالنے سے ان کے مضر اثرات زائل ہو جاتے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو