خیبر کی شکست یہودی نہیں بھولے

تم کیا سمجھتے ہو یہ محض کاغذ کا ایک ٹکڑا ہے…؟
ایک پلے کارڈ ہے…؟

جس پر کچھ آڑی ترچھی لائنوں میں کچھ لفظ لکھے ہیں اور بس…؟

نہیں … یہ مسلمانوں کی غیرت و حمیت کو للکارا جا رہا ہے. جو بھی محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم کا چاہنے والا ہے، اس کے لئے یہ تازیانہ ہے.

یہ لڑکا کہہ رہا ہے خیبر بس تمہاری آخری کامیابی تھی. آج کی مسلمان نسل کو اپنی تاریخ فراموش کرکے، یہود و نصاری کی پٹی پر چلتے، شاید خبر بھی نہ ہو کہ خیبر یہودیوں کے لئے کتنی بڑی ذلت کی شکست تھی۔

یہ پلے کارڈ اس بات کا اعلان بھی ہے کہ ہر زمانہ میں کوئی علم و ہنر عروج پر ہوتا ہے. موسی علیہ السلام کا دور جادوگری کا تھا تو عیسی علیہ السلام کا زمانہ میڈیکل سائنس کا، نبی رحمت صلی اللہ علیہ و سلم کا دور زبان و ادب کا تھا اور ہمارا یہ دور زراعت و صنعت سے آگے، انفارمیشن ٹیکنالوجی بلکہ اب آرٹیفیشل انٹیلی جنس کا ہے. اسلحہ و لڑائی کے سامان بھی ان یہودی سازشیوں نے بس ہم ایسے احمقوں کو بیچ کے پیسے کمانے کے لئے رکھ چھوڑے ہیں.

یہ نوجوان دراصل کہہ رہا ہے تم لڑو اس پر کہ لوٹا کون تھا اور ٹکٹ کسے ملنا تھا ،کس نے گلی پکی نہیں کروائی اور کون رفع یدین نہیں کرتا. تم مرو اس بات پر کہ میرے لیڈر کی شخصیت کا بت زیادہ خوبصورت ہے اس کی عبادت کی جائے اور ہماری تاریخ تمہاری سے زیادہ تابناک ہے تم لڑو اور ہم آج ہر فیلڈ میں دنیا کے لیڈر ہیں. زراعت، سائنس، انفارمیشن ٹیکنالوجی، اسلحہ، تحقیق، کمیونیکیشن سب کچھ میں ہم دنیا کو چلا رہے ہیں.

دنیا کو جو ہم دکھاتے ہیں وہ دیکھتی ہے.
دنیا کو جو ہم سناتے ہیں، وہ سنتی ہے.
دنیا جو ہم بتاتے ہیں، بس وہی جانتی ہے.
تم لگاتے رہو نعرے مچاتے رہو شور۔۔۔
خیر صاحب سب چھوڑو ، کوستے رہو ایک دوسرے کو، پرستش کرتے رہو اپنے بتوں کی…

ہاں اس پلے کارڈ نے اگر کسی کے سینے میں واقعی آگ لگا دی ہے اور حاضر و موجود سے بیزار کر دیا ہے، ذلت و احساس زیاں کا انگارہ ہتھیلی پہ رکھ دیا ہے تو وہ سوچے اُس نے ایمان کو سینے میں بھر کر عقل و ذہانت کے میدان میں کیسے خود اور اس کی اگلی نسل نے اس پلے کارڈ کا جواب دینا ہے…؟

رب کی دھرتی پہ رب کا نظام اور نظام عالم کی باگ دوڑ جب تک مسلمانوں کے ہاتھوں میں نہیں آئے گی، انسان پستے ہی رہیں گے…

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

تبصرہ کرنے سے پہلے آپ کا لاگ ان ہونا ضروری ہے۔

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو