لاک ڈاؤن کے باعث 145 پاکستانی بھارت میں پھنس گئے

لاہور: کورونا وائرس لاک ڈاؤن کے سبب 145 پاکستانی بھارت میں پھنسے ہوئے ہیں جنہوں نے وطن واپسی کے لیے حکومت سے اپیل کردی۔

کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ہونے والے لاک ڈاؤن کے باعث 145 پاکستانی بھارت میں پھنسے ہوئے ہیں، تمام افراد کا تعلق کراچی سے ہے، ان میں ایک ہی خاندان کے 5 افراد سمیت 9 پاکستانی ممبئی کے ایک ہوٹل میں مقیم ہیں اور ان کے پاس اب ہوٹل کا بل اداکرنے کے لیے پیسے بھی ختم ہوچکے ہیں۔

ممبئی کے ہوٹل میں مقیم ایک خاتون کا کہنا ہے کہ وہ لوگ 9 مارچ کو واہگہ بارڈرکے راستے ممبئی آئے تھے اور19 مارچ کو وطن واپسی تھی تاہم اس دوران کورونا کا ایشو سامنے آگیا اور لاک ڈاؤن کردیا گیا جس کی وجہ سے وہ ہوٹل میں پھنس گئے، ان کے پاس جو رقم تھی وہ بھی ختم ہوچکی ہے اور ادویات بھی موجود نہیں ہیں۔

کراچی سے تعلق رکھنے والی ایک اور خاتون شمیمہ شبیر نے کہا کہ بھارتی حکومت نے ان کے ویزوں میں توسیع کردی ہے لیکن ا ب ان کے پاس یہاں مزید قیام کے لیے رقم نہیں ہے، ہماری وزیراعظم عمران خان اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے اپیل ہے کہ ہماری واپسی کے لیے بھارتی حکومت سے رابطہ کیا جائے۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے پاک بھارت سرحد بند ہے، گزشتہ دو ہفتوں کے دوران بھارت میں پھنسے 46 پاکستانی دو مرحلوں میں واپس وطن پہنچ چکے ہیں، واپس آنے والے ان افراد میں سے 5 میں کورونا ٹیسٹ مثبت آیا تھا جس کے اب مزید پاکستانیوں کی واپسی کے حوالے سے پالیسی سخت کی جارہی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

تبصرہ کرنے سے پہلے آپ کا لاگ ان ہونا ضروری ہے۔

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو