لاک ڈاؤن متاثرین کو زائد المیعاد راشن دینے کے واقعات

جو اشیا جانور بھی نہیں کھاتے وہ ہمیں دی گئیں، مظاہرین

ٹنڈو آدم / بدین: زیریں سندھ میں حکومت سندھ کی جانب سے غیرمعیاری اور زائدالمیعاد راشن کی تقسیم کا انکشاف.

گزشتہ دنوں ٹنڈوآدم میں سندھ حکومت نے مضرصحت اور زائد المیعاد اشیا پر مشتمل راشن فراہم کیا تھا جس پر شہریوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے غیرمعیاری راشن گھروں سے باہر پھینک دیا۔

مظاہرین نے الزام عائد کیا کہ حکومت نے جو راشن تقسیم کیا، وہ پرانا ہے۔ دال میں کیڑا لگا تھا جبکہ چاول 20سے 30روپے فی کلو والے ہیں جو پرندوں کو ڈالے جاتے ہیں۔

دوسری جانب ڈی سی سانگھڑ ڈاکٹر عمران الحق خواجہ نے نمائندہ ایکسپریس کو بتایاکہ غیرمعیاری راشن فراہم کرنے کا ذمے دار ٹھیکیدار ہے جس کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے لائسنس معطل کرکے 20لاکھ روپے کا بل روک لیا گیا ہے، 6 سو راشن بیگ میں غیرمعیاری اشیا کا انکشاف ہوا، متاثرین کو نیا راشن جلد فراہم کیا جائے گا۔

ادھر سانگھڑ میں بھی غریبوں کو فراہم کردہ سرکاری راشن سے 13 سال پرانی چائے کی پتی اور غیر معیاری اشیا نکلنے کا انکشاف ہوا ہے، شہریوں کے احتجاج پر ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر عمران الحسن خواجہ نے نوٹس لیتے ہوئے ٹھیکیدار کا لائنسس منسوخ اور تمام بل روک دیے ہیں، انہوں نے فراہم کردہ ناقص راشن کی جگہ دوسرا راشن دینے کی ہدایت کر دی، بتایا جاتا ہے کہ ٹنڈوآدم کے بعد جھول کے مختلف علاقوں میں بھی جو راشن دیا گیا اس میں بھی زائد المیعاد چائے کی پتی اور دیگر اشیا ناقص ہیں۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ ناقص راشن تحصیل دار اور اسسٹنٹ کمشنرز کی نگرانی میں تقسیم کیا گیا لیکن انہوں نے اسے چیک کرنے کی زحمت تک نہیں کی۔

ذرائع کے مطابق راشن میں درجہ سوئم کے چاول، گھی، دال اور آٹا دیا جارہا ہے اور اب تک ایک محتاط اندازے کے مطابق اسی طرح کے دس ہزار بیگ تقسیم بھی کیے جاچکے ہیں جبکہ راشن بیگ میں مبینہ طورپر 12 کی جگہ 6 اشیاء ہیں جن کا وزن بھی سندھ حکومت کی مقررکردہ وزن سے کم ہے۔

ڈی سی کا کہنا ہے کہ راشن کے معاملے میں کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ ڈپٹی کمشنر سانگھڑ کا سرکاری راشن میں زائدالمیعاد اشیاء کی فراہمی پر نوٹس لینے کے بعد مختار کار قمرالدین راہوپوٹو، ڈاکٹرز اور پولیس نفری کے ہمراہ یونین کونسل جٹیا میں کاٹن فیکٹری میں چھاپہ مارا جہاں رکھے سرکاری راشن کے نمونے ٹیسٹ کے لیے بھیج دیے، مختار کار نے کہا کہ سرکاری راشن کی تقسیم میں کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

تبصرہ کرنے سے پہلے آپ کا لاگ ان ہونا ضروری ہے۔

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو