متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر ڈی ایچ اے کے قبضے کے خلاف درخواست پر سماعت

لاہور ہائی کورٹ نے متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی (ڈی ایچ اے) کے قبضے کے خلاف درخواستوں پر ایڈمنسٹریٹر ڈی ایچ اے، کمشنر اور ڈپٹی کمشنر لاہور کو کل ریکارڈ سمیت طلب کرلیا۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس قاسم خان نے سماعت کے دوران حکم دیا کہ ضلعی انتظامیہ کل ہی لاہور ہائی کورٹ کی 50 کنال زمین کی نشاندہی کرکے رپورٹ پیش کرے۔

انھوں نے ریمارکس دئیے کہ ہائی کورٹ کی اراضی پر غیر قانونی طور پر قائم ساری کوٹھیاں گروا دیں گے۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے ڈی ایچ اے انتظامیہ کو تنبیہ کی کہ متروکہ وقف املاک کی اراضی سمیت تمام اراضی کا قبضہ چھوڑ دیں جس کا انتقال ابھی نہیں ہوا۔

عدالت نے سی سی پی او لاہور کو حکم دیا کہ تمام ایس ایچ اوز کو مراسلہ جاری کیا جائے کہ اگر کوئی ڈی ایچ اے کی جانب سے زمین پر قبضے کے خلاف درخواست دے تو فوری طور پر پرچہ درج کیا جائے اور بعد میں تفتیش کی جائے۔

عدالت نے ریمارکس دئیے کہ کیا تماشہ لگا کر رکھا ہوا ہے، لیز پر لی گئی اراضی الاٹ کرکے تعمیرات کروا دیں، قانون سب کے لیے برابر ہے، 11سال تک کبھی ڈر کر نوکری نہیں کی، عزت کے لیے یہاں بیٹھے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو