سعودی حکومت نے کرفیو پاس منسوخ کر دئیے

سعودی عرب میں کورونا وائرس کے سبب کرفیو کے دوران آمدورفت کے لیے استعمال ہونے والے پاس منگل 21 اپریل سے منسوخ ہوجائیں گے جس کے بعد یکساں سینٹر لائز پاسز ہی کارآمد ہوں گے۔

عرب میڈیا کے مطابق وزارت داخلہ کی جانب سے کرفیو پاسز کے بارے میں جاری ہونے والے بیان کے حوالے سے سعودی خبررساں ایجنسی ایس پی اے کا کہنا ہے کہ مملکت کی سطح پر یکساں ڈیجیٹل پاسز ہی کارآمد ہوں گے جن اداروں نے اپنے کارکنوں کے سینٹر لائز حاصل نہیں کیے وہ منگل 21 اپریل تک حاصل کرلیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مملکت بھر میں یکساں پاسز کا اجرا وزارت داخلہ کی منظوری سے کیا جائے گا۔ یکساں پاسز کا مقصد معاملات کو منظم کرنا ہے تاکہ جاری ہونے والے کرفیو پاسز کے اعداد و شمار ادارے کے پاس موجود ہوں۔

واضح رہے کہ دیگر ممالک کے طرح سعودی عرب میں بھی کورونا وائرس کے حوالے سے پورے ملک میں کرفیو نافذ ہے جبکہ جدہ سمیت ملک کے 9 شہروں میں 24 گھنٹے کا کرفیو نافذ کیا گیا ہے جہاں مختلف علاقوں میں رہنے والوں کا رابطہ دوسرے علاقوں کے لوگوں سے بھی منقطع کرکے انہیں سیل کر دیا گیا ہے تاکہ کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکا جاسکے۔

اشیائے ضروریہ کی ترسیل اور اہم امور کی انجام دہی کے لیے کارکنوں کو کرفیو کے دوران آمدورفت کے خصوصی پاسز جاری کیے جاتے ہیں۔

قبل ازیں راویتی کرفیو پاس ہر ادارہ اپنے کارکن کو جاری کرتا تھا جس میں کارکن کی شناخت بتاتے ہوئے اس کے کام کی نوعیت اور روٹ بھی متعین کیا جاتا تھا۔ میڈیا سے متعلق افراد کیلئے کرفیو پاس ادارے کے لیٹرپیڈ پر ہی جاری ہوتا تھا جسے وزارت اطلاعات کے ذیلی دفتر بعدازاں علاقے کے تھانے سے تصدیق کرایا جاتا تھا۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے یکساں پاسز کا طریقہ کار صرف ریاض اور مکہ مکرمہ میں تجرباتی طور پر متعارف کرایا گیا تھا جس کے بعد اسے پورے ملک میں نافذ کیا جارہا ہے۔ وزارت داخلہ نے یکساں کرفیو پاسز کیلئے 21 اپریل 2020 کی ڈیڈ لائن مقرر کی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

تبصرہ کرنے سے پہلے آپ کا لاگ ان ہونا ضروری ہے۔

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو