امریکی ماہرین کا کورونا وائرس کی دوا تلاش کرنے کا دعویٰ

امریکا کے طبی ماہرین نے کورونا وائرس سے علاج کیلئے ایک اور دوا کا تجربہ کیا، جس کے حوصلہ افزا نتائج سامنے آئے ہیں۔

میڈیا رپورٹز کے مطابق امریکی ماہرین نے کورونا وائرس سے نجات حاصل کرنے کے لیے ریمڈِ سیوِ نامی دوا تیار کی جس کا اُن بندروں پر تجربہ کیا گیا جو کورونا وائرس کی نئی قسم سے متاثر ہوئے تھے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ دوا کا تجربہ انتہائی کامیاب رہا، ابتدائی نتائج کے مطابق بیمار بندروں پر ہونے والے آزمائش میں دوا کے مثبت اثرات سامنے آئے اور بندر صحت یاب ہونا شروع ہوگئے۔

امریکی ادارے کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق وائرس کے انسداد کے لیے جو دوا تیار کی گئی اُس کے مثبت کلینیکل نتائج سامنے آئے جو ہم سب کے لیے حوصلہ افزا ہیں، دوا دینے کے بعد بندروں کی بیماری میں کمی ہوئی اور اُن کے متاثر ہونے والے پھیپھڑے بھی پہلے سے زیادہ بہتر ہوگئے۔

اعلامیے کے مطابق ریمڈِسیوِر نامی دوا کی آزمائش قومی ادارے ان آئی ایچ کی زیر نگرانی جاری ہے، چونکہ ابھی اس دوا کی باضابطہ منظوری نہیں ۲۲۲کی گئی اس لیے اس کا تجربہ انسانوں پر نہیں کیا جاسکا۔

ماہرین کے مطابق دوا انسانی جسم میں داخل ہونے کے بعد کرونا وائرس کو مکمل طور پر ہلاک یا ختم کردیتی ہے۔ دوا کی تخلیق طبی تحقیقی ادارے جیلیڈ سائنسز کے محققین نے کی۔

یاد رہے کہ کورونا وائرس کی وبا سے دنیا بھر میں متاثر ہونے والے افراد کی تعداد 22 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہیں۔ پاکستان سمیت کئی ملکوں میں اس بیماری کے علاج کے لیے دوا بنانے کا سلسلہ جاری ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

تبصرہ کرنے سے پہلے آپ کا لاگ ان ہونا ضروری ہے۔

اسی طرح کی مزید پوسٹس

مینو