روزانہ صرف ایک آڑو کھانے سے جسم پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں؟

آڑو موسم گرما کے بہترین پھلوں میں سے ایک ہے / فوٹو بشکریہ کلیو لینڈ کلینک
آڑو موسم گرما کے بہترین پھلوں میں سے ایک ہے / فوٹو بشکریہ کلیو لینڈ کلینک

موسم گرما میں متعدد پھل دستیاب ہوتے ہیں اور ان میں سے ہر ایک ذائقے کے حوالے سے منفرد ہوتا ہے۔

ایسا ہی ایک پھل آڑو ہے جو اس موسم میں دستیاب ایک بہترین سوغات ہے ۔

کھٹے میٹھے ذائقے والے آڑو وٹامنز، منرلز اور اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور ہوتے ہیں ۔

درحقیقت دن میں صرف ایک آڑو کھانے سے بھی آپ اپنی صحت کو متعدد فوائد پہنچا سکتے ہیں۔

ایک بڑے آڑو کھانے سے 68 کیلوریز، 2 گرام فائبر، 1.3 گرام پروٹین کے ساتھ ساتھ وٹامن سی، وٹامن اے اور پوٹاشیم سمیت متعدد غذائی اجزا جسم کا حصہ بنتے ہیں۔

روزانہ ایک آڑو کھانا عادت بنالیں تو آپ اپنے جسم میں درج ذیل تبدیلیاں لاسکتے ہیں۔

مدافعتی نظام مضبوط بنائے

ایک درمیانے سائزکے آڑو میں وٹامن سی کی روزانہ درکار مقدار کا 13.2 فیصد حصہ ہوتا ہے۔

وٹامن سی جسم کے زخم بھرنے کی صلاحیت کو بہتر کرنے کے ساتھ ساتھ مدافعتی نظام کو مضبوط بناتا ہے، جبکہ جسم میں گردش کرنے والے ایسے کیمیکلز کے اخراج کے لیے بھی مدد فراہم کرتا ہے جو خلیات کو نقصان پہنچا کر کینسر کا خطرہ بڑھاتے ہیں۔

بینائی کے لیے مددگار

آڑو کا خوبصورت گولڈن۔ اورنج رنگ بیٹا کیروٹین نامی ایک اینٹی آکسائیڈنٹ کا نتیجہ ہوتا ہے، جب آپ اس پھل کو کھاتے ہیں تو یہ بیٹا کیروٹین جسم کے اندر جاکر وٹامن اے میں بدل جاتا ہے۔

وٹامن اے صحت مند بینائی کے لیے انتہائی اہم ہوتا ہے جبکہ یہ جسم کے دیگر حصوں جیسے مدافعتی نظام کے افعال کے لیے بھی مددگار ثابت ہوتا ہے۔

ہاضمے کو بہتر کرے

ایک درمیانے سائز کا آڑو جسم کو روزانہ درکار فائبر کی 6 سے 9 فیصد مقدار فراہم کرتا ہے۔فائبر سے بھرپور غذاؤں سے مختلف مسائل جیسے ذیابیطس، امراض قلب وغیرہ سے تحفظ ملتا ہے مگر یہ سب سے زیادہ ہاضمے کے لیے مفید ہوتی ہیں بالخصوص قبض کو آپ سے دور رکھنے کے لیے۔

صحت مند جسمانی وزن برقرار رکھنے میں مددگار

آڑو میں کیلوریز کی مقدار بہت کم ہوتی ہے جبکہ چکنائی، کولیسٹرول یا سوڈیم بالکل نہیں ہوتے، اس کے ساتھ ساتھ آڑو کا 85 فیصد سے زیادہ حصہ پانی پر مشتمل ہوتا ہے اور فائبر کی مقدار بھی مناسب ہوتی ہے، تو اسے کھانے سے پیٹ بھرنے کا احساس دیر تک برقرار رہتا ہے اور بے وقت کچھ کھانے سے بچنے میں مدد ملتی ہے جو جسمانی وزن کو بڑھنے سے بچانے کے لیے اہم ہے۔

خلیات اور خون کی شریانوں کے لیے فائدہ مند

آڑو میں وٹامن ای بھی ہوتا ہے اور یہ ایک ایسا اینٹی آکسائیڈنٹ ہے جوجسم کے متعدد خلیات کے لیے بہت اہم ہوتا ہے۔

وٹامن ای مدافعتی نظام کو صحت مند رکھنے اور خون کی شریانوں کو کشادہ رکھنے میں بھی مدد فراہم کرتا ہے جس سے شریانوں کے اندر بلڈ کلاٹ کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

ہڈیاں بھی صحت مند بنائے

اگر آپ زیادہ نمک والی غذائیں کھانے کے عادی ہیں تو اس پھل میں موجود پوٹاشیم جسم کے اندر نمک کے اثرات کو توازن میں لانے میں مدد فراہم کرے گا۔

پوٹاشیم سے بلڈ پریشر کی سطح میں کمی آسکتی ہے جبکہ عمر  بڑھنے کے ساتھ ہڈیوں کے حجم میں کمی کا خطرہ بھی کم ہوتا ہے۔ ہر فرد کو روزانہ 4700 ملی گرام پوٹاشیم کی ضرورت ہوتی ہے اور ایک چھوٹے آڑو میں پوٹاشیم کی مقدار 247 ملی گرام جبکہ درمیانے سائز کے آڑو میں 285 ملی گرام ہوتی ہے۔

دانتوں کی مضبوطی کے لیے بھی مفید

آڑو میں موجود فلورائیڈ دانتوں کو صحت مند رکھنے میں مدد فراہم کرتا ہے، یہ منرل ٹوتھ پیسٹس میں استعمال ہوتا ہے جو کہ منہ کے جراثیموں کا خاتمہ کرکے کیوٹیز سے تحفظ فراہم کرتا ہے۔

دل کی صحت بہتر بنائے

آڑو دل کی صحت کے لیے بھی بہترین پھل ہے، جانوروں پر ہونے والی تحقیقی رپورٹس میں دریافت کیا گیا ہے کہ آڑو کے ایکسٹریکٹ سے کولیسٹرول اور ہائی بلڈ پریشر کو کم رکھنے میں مدد ملتی ہے، جبکہ اس میں موجود پوٹاشیم بھی بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے، جس سے ہارٹ اٹیک اور فالج جیسے امراض کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

ورم کم کرے

بناتاتی پولی فینولز اور پری بائیوٹیکس جیسے غذائی اجزا آڑو میں پائے جاتے ہیں جن کو جسمانی ورم میں کمی لانے کے لیے مفید سمجھا جاتا ہے۔

جسمانی ورم سے مختلف امراض بشمول امراض قلب، ذیابیطس، کینسر اور الزائمر امراض کا خطرہ بڑھتا ہے۔

اچھے آڑو کا انتخاب کیسے کریں؟

آڑو کی مہک اس حوالے سے اہم کردار ادا کرتی ہے، خوشبو جتنی زیادہ اچھی ہوگی اتنا ہی پھل پکا ہوا ہوگا، اگر مہک زیادہ نہ ہو اور پھل انگلی سے دبانے پر سخت محسوس ہو تو اسے کسی جگہ پکنے کے لیے چھوڑ کر کچھ وقت یا دن کے بعد کھالیں۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔