ہارنے کا خوف، صدر ٹرمپ نے انتخابات میں دھاندلی کا خدشہ ظاہر کر دیا

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ہارنے کے خوف سے انتخابات میں دھاندلی ہونے کا خدشہ ظاہر کر دیا۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے پنسلوانیا میں ریلی کے شرکاء سے خطاب کے دوران طنز کرتے ہوئےکہا کہ نتائج کے لیے تاریخ بڑھا دیں تاکہ اور لوگ ووٹ ڈال لیں۔

انہوں نے کہا کہ نتائج کی تاریخ بڑھانا مایوس کن ہے، جب وقت تھا تو لوگوں نے اپنا ووٹ ڈالا کیوں نہیں، دھاندلی 3 نومبر سے اس عرصےکے دوران ہوگی جو سپریم کورٹ دےگی۔

امریکی صدر نے کہا کہ کاش سپریم کورٹ مجھ سے اچھا برتاؤ کرتی، ری پبلکنز یقینی بنائیں کہ 3 نومبر کو ووٹ ڈالیں، ایک دوسرے کوپکڑ کر پولنگ بوتھ لے جائیں اور ماتحت اپنے افسر کو بھی لے کر ووٹ ڈلوائے۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے ریلی کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے ڈیموکریٹس کو دلدل کے کیڑوں سے تشبیہ دی اور کہا کہ جوبائیڈن آئے تو کورونا ویکسین مزید التوا کا شکار ہو گی، پھر سے لاک ڈاؤن لگا دیا جائے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ آپ خوش قسمت ہیں میں آپ کا صدر ہوں، پنسلوانیا کا نتیجہ ری پبلکنز کے حق میں نکلا تو جیت یقینی ہو گی۔

امریکا میں صدارتی انتخاب 3 نومبر کو ہونے ہیں اور اس میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور ڈیموکریٹک امیدوار جوبائیڈن کے درمیان کانٹے کے مقابلہ متوقع ہے جب کہ عوامی جائزہ پولز میں ڈونلڈ ٹرمپ اپنے حریف جو بائیڈن سے پیچھے ہیں۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ دوسری بار ری پبلکن پارٹی کی جانب سے صدارتی امیدوار ہیں، وہ 2016ء میں ہیلری کلنٹن کو شکست دیکر صدر منتخب ہوئے تھے تاہم وہ اس وقت بھی ٹرمپ پاپولر ووٹ میں ہیلری کلنٹن سے پیچھے تھے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو