کورونا کے بڑھتے خدشات کے باعث سعودیہ ایئر لائن کا ایسا فیصلہ سامنے آگیا، ملازمین سر پکڑ کر بیٹھ گئے

سعودیہ کی سرکاری فضائی کمپنی سعودیہ ایئر لائن کی جانب سے خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ رواں سال کے دوران کورونا کے باعث معمول کے مطابق تمام پروازیں شروع نہیں ہو سکیں گی۔

العربیہ نیٹ کے مطابق اسی وجہ سے سعودیہ ایئر لائن کی جانب سے اپنے فضائی عملے کے متعدد ملازمین کو ایک ای میل کے ذریعے ان کی ملازمت کے کانٹریکٹ سال 2020ء کے اختتام تک کیلئے معطل کرنے کی اطلاع دی گئی ہے۔

سعودی حکومت کی جانب سے تمام بین الاقوامی پروازوں اور عمرہ زائرین اور عازمین حج کو لانے والی خصوصی پروازوں پر بھی عارضی پابندی لگا دی ہے. مملکت سے دیگر ممالک کو بھی پروازیں بند کر دی گئی ہیں۔ اسی وجہ سے سعودیہ ایئرلائن کی جانب سے کچھ ملازمین کو وقتی طور پر ملازمت سے برخاست کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

جن ملازمین کو ان کے کانٹریکٹس معطل کرنے کی ای میل بھیجی گئی ہے، اس میں کہا گیا ہے کہ اس بات کا امکان ہے کہ رواں سال دسمبر کے مہینے تک فلائٹ آپریشنز معمول پر نہیں آئیں گے، اس لیے ان کے سال 2020ء کی باقی مہینوں کیلئے کانٹریکٹس معطل کیے جا رہے ہیں۔

تاہم یہ تفصیلات نہیں بتائی گئیں کہ فضائی عملے کے کتنے ملازمین کے کانٹریکٹس معطل کئے گئے ہیں۔ ایئر لائن کی جانب سے رابطہ کرنے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا۔

سعودیہ ایئر لائنز کا شمار دُنیا کی بڑی ایئر لائنز ہے جس کے پاس 142 چھوٹے بڑے مسافر بردار جہاز ہیں، جن پر سالانہ تین کروڑ چالیس لاکھ سے زائد افراد سفر کرتے ہیں۔ سعودیہ کی پروازیں دُنیا بھر کے 95 ایئرپورٹس پر لینڈ کرتی ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو