کورونا وائرس نے کر دیا بھارتی صدارتی محل پر حملہ، اسٹاف کوارٹر میں تعینات 500 افراد قرنطینہ منتقل

مہلک وبا نے بھارتی صدارتی محل پرحملہ کر دیا،اسٹاف کوارٹر میں تعینات پانچ سو افراد کوقرنطینہ منتقل کر دیا گیا ہے،درجنوں افراد میں کورونا کی تشخیص ہو چکی ہے۔صدارتی محل میں ہر طرف خوف پھیل گیا۔

بھارتی صدر رام ناتھ کووند کی رہائش گاہ کے اسٹاف میں کورونا کی تشخیص ہوئی تو مارے خوف کے بھارتی صدر کی تو حالت ہی خراب ہو گئی۔حکام کو بھی لینے کے دینے پڑ گئے،کورونا حملے کی خبر چھپائے نہیں چھپ رہی، وبائی حملے کے خطرات کے باوجود رام ناتھ نے آئی سولیشن میں جانے سے انکار کر دیا ہے اور کورونا سے متاثرہ عملے کو نیچ درجے کا قرار دیا ہے۔

صدارتی محل کے ایک سو چودہ اپارٹمنٹس میں مقیم خاندانوں میں نا جانے کتنے افراد ایسے ہیں جنہیں مہلک وبا گھیر چکی ہے،ایسے میں جب ملک کے اعلی ترین عہدے پر فائض شخصیت ہی وبا کے معاملے پر غیردانش مندانہ رویہ اپنائے تو عام شہریوں کا تو خداہی حافظ ہے،بھرم رکھنے کے لیے صدارتی محل کے چھوٹے عملے کے سات افراد کو زبردستی قرنطینہ منتقل کیا گیا ہے۔

مودی حکومت کورونا کے حملے روکنے میں بری طرح ناکام ہو چکی ہے۔ اب تک ہلاکتوں کی تعداد چھ سو پینتالیس سے زائد ہے،مریضوں کی مجموعی تعداد بیس ہزار اسی سے تجاوز کر چکی ہے۔

نااہلیوں کے نتیجے میں آنے والی عوامی غیض و غضب کی لہر سے بچنے کے لیے آر ایس ایس کے غنڈوں اور انتہا پسند سیاستدانوں نے وبا کا زمہ دار مسلمانوں کو قرار دے کر غصے اور نفرت کا رخ مسلمانوں کی جانب موڑ دیا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو