کراچی میں سارا دن گھومتے رہے لیکن وفاقی حکومت کہیں نظر نہیں آئی: شہباز شریف

مسلم لیگ ن کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف کا کہنا ہےکہ اپوزيشن اور مودی کو ایک پیج پر وہ شخص کہہ رہا ہے کہ جو کہتا تھا کہ مودی کو فون کر رہا ہوں لیکن وہ فون نہیں اٹھا رہا، مودی جیت گیا تو مسئلہ کشمیر حل ہو جائے گا۔

کراچی سے لاہور پہنچنے پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہباز شریف کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) سے متعلق الزام لگا کر زیادتی کی، اپوزیشن نے ایوان میں مقبوضہ کشمیر کی صورت حال پر سب سے زیادہ شور مچایا تھا۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ بارشوں نے کراچی میں خاصی تباہی مچائی ہے، وزیراعظم کا کام تھا کہ وہ اس وقت کراچی میں بیٹھتے اور سندھ حکومت کے ساتھ امدادی سرگرمیوں کی نگرانی کرتے، سندھ حکومت اپنے طور پر کوشش کر رہی ہے لیکن وفاق کی جانب سے صرف لفاظی کی گئی، ہم کل کراچی میں سارا دن گھومتے رہے لیکن وفاقی حکومت کہیں نظر نہیں آئی۔

اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ ہم مہنگائی اور عوامی مسائل کی بات کرتے ہیں تو ہمیں کہا جاتا ہے کہ ہم این آر او مانگتے ہیں، اگر نواز شریف وزیراعظم ہوتے تو وہ کراچی میں ڈیرے لگائے ہوتے لیکن عمران خان ابھی تک کراچی نہیں گئے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے معاملے میں عدالت کا حکم سر آنکھوں پر لیکن ہم عدالتوں سے بھاگے کب ہیں، جب ڈاکٹر اجازت دیں گے تو وہ عدالت کے سامنے پیش ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کی کابینہ کے لوگ کرپشن میں مبتلا ہیں اور خود کو دودھ کا دھلا کہتے ہیں، نواز شریف، میں، مریم اور حمزہ نے خود کو احتساب کے لیے پیش کیا تو حکومتی عہدیداروں کو بھی ایسا کرنا چاہیے۔

شہباز شریف کا مزید کہنا تھا کہ میں نے کراچی میں آصف زرداری کی عیادت کی اور وہاں کچھ سیاسی باتیں بھی ہوئی ہیں، آج رہبر کمیٹی کا اجلاس ہو رہا ہے جس میں اے پی سی کا ایجنڈا طے کیا جائے گا، اس کے وقت کا تعین تمام جماعتیں کریں گی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو