کراچی میں بھتہ خوری سر اٹھانے لگی، بلڈر سے 50 لاکھ روپے بھتہ طلب

کراچی شہر میں بھتہ خوری کے واقعات ایک بار پھر سر اٹھارہے ہیں اور کاروباری شخصیات کو بھتہ دینے کی دھمکیاں دی جارہی ہیں۔

پولیس کے مطابق نیوٹاؤن تھانے کی حدود میں مبینہ طور پر بلڈر کو 50 لاکھ روپے بھتے کی پرچی ملی جس کے بعد واقعے کا مقدمہ متاثرہ بلڈر محمد عمران کی مدعیت میں درج کر لیا گیا ہے۔

متاثرہ بلڈر عمران نے پولیس کو بتایا کہ جمال الدین افغانی روڈ پر اپنے دفتر میں پارٹنر اشرف اور ملازم محمد عمران کے ساتھ موجود تھا کہ اس دوران 2 ملزمان پستول اور گرنیڈ ہاتھ میں تھامے دفتر میں گھس گئے۔

بلڈر عمران نے بتایا کہ ملزمان نے پہلے اسلحے کے زور پر لوٹ مار کی اور موبائل فون اور نقد رقم چھین لی جس کے بعد ایک پرچی دی جس پر بیرون ملک کا فون نمبر اور استاد احمد علی مگسی لکھا ہوا تھا، ملزمان نے کہا کہ اس نمبر سے فون آئے گا اور 50 لاکھ روپے بھتے کا بندوبست کر لو جب کہ ملزمان نے نے جاتے ہوئے ٹی ٹی پستول کا بٹ سر پر مار کر مجھے زخمی کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ 10 منٹ بعد پرچی پر لکھے ہوئے نمبر سے واٹس ایپ پر فون آیا اور فون کرنے والے نے اپنا نام احمد علی مگسی بتایا اور 50 لاکھ روپے بھتہ مانگا جب کہ بھتہ خور نے دھمکی دی کہ یہ ابھی ٹریلر ہے، 50 لاکھ کا بندوبست نہیں ہوا تو بعد میں بچوں سے وصول کرلیں گے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو