پی ٹی آئی، ایم کیو ایم اور پی ایس پی نے بھی این اے 249 کے نتائج مسترد کردیے

پاکستان تحریک انصاف، ایم کیو ایم اور پی ایس پی نے بھی این اے 249 کے نتائج مسترد کردئیے۔

وفاقی وزیر اور پی ٹی آئی رہنما علی زیدی نے نتائج پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کرپٹ پیپلزپارٹی اور صوبائی الیکشن کمیشن کا کرپشن میں چولی دامن کا ساتھ ہے۔

انہوں نے کہا کہ این اے 249 میں پیپلزپارٹی مقابلے میں ہی نہیں تھی، پی ٹی آئی نے 17 ہزار پرچیاں کاٹیں، ووٹ سامنے کیوں نہیں آئے؟ ہر امیدوار لعن طعن کررہاہے، کوئی مطمئن نہیں۔

وزیراعظم کےمعاون خصوصی شہباز گل نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے کمال کردیا، ہرپارٹی دھاندلی کا شور مچا رہی ہے۔

ایم کیو ایم کا ردعمل

ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما بھی این اے 249 کے نتائج پر غیر مطمئن نظر آئے اور عامرخان نے کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے یہ 2018ء کے الیکشن کا تسلسل ہے۔

فیصل سبزواری کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کو چاہیے وہ اپنے عملے کی شفافیت کو چیک کرے، ضمنی الیکشن کےحوالے سے بہت سنگین سوالات پیدا ہوئےہیں۔

پی ایس پی نے بھی نتائج مسترد کردیے

ادھر چیئرمین پاک سر زمین پارٹی مصطفیٰ کمال نے کہا کہ ڈی آر او آفس میں ڈرامہ چلایا گیا اور پاک سرزمین پارٹی نتائج قبول نہیں کرے گی۔

الیکشن کمیشن کا بیان

دوسری جانب ترجمان الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ این اے 249 ضمنی انتخاب میں اگر کسی کو کوئی شکایت تو ہمیں بتائے، ہم کارروائی کریں گے، اگرکسی کو کوئی شکایت ہو تو اس کوقانون کے مطابق سنا جائے، دھاندلی کا کوئی ثبوت ملا تو سخت سے سخت ایکشن لیا جائے گا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو