پاک افغان باب دوستی پر دھرنا مظاہرین کی فورسز سے جھڑپ، 4 افراد جاں بحق

چمن میں پاک افغان بارڈر ‘باب دوستی’ پردھرنا دینے والے مسافروں نے زبردستی سرحد عبور کرنے کی کوشش کی، مشتعل مظاہرین ریڈ زون میں داخل ہوگئے، توڑ پھوڑ کی، دفاتر، قرنطینہ سینٹر، ہزار کے قریب خیموں اور این ڈی ایم اے کے 100 کےقریب کنٹینرز کو آگ لگا دی۔

مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے سیکیورٹی فورسز نے شیلنگ اور ہوائی فائرنگ کی جبکہ جھڑپوں کے باعث علاقے کے حالات کشیدہ ہو گئے، مزید نفری طلب کر لی گئی۔ واقعے میں 4 افراد ہلاک اور 19 زخمی ہو گئے۔

پاک افغان سرحد باب دوستی پر آل پارٹیز تاجر اتحاد اور محنت کش گروپ کا 2 ماہ سے سرحد کی بندش کےخلاف دھرنا جاری ہے۔

جمعرات کو دھرنا مظاہرین مشتعل ہوگئے اور رکاوٹیں ہٹاتے ہوئے ریڈ زون میں داخل ہوگئے اور سرکاری املاک کو نقصان پہنچانا شروع کردیا۔

مظاہرین نے زبردستی سرحد عبور کرنے کی کوشش کی۔ مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے فورسز کی جانب سے ہوائی فائرنگ اور شیلنگ کی گئی۔

مشتعل مظاہرین نے بارڈر منیجمنٹ سسٹم کے لیے نادرا دفتر کے کمپیوٹرز رومز کو بھی آگ لگا دی۔

مظاہرین باب دوستی کے ساتھ واقع قرنطینہ سینٹر میں داخل ہوئے اور سینٹر، خیمے اور دفاتر کو آگ لگادی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو