انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں 60 پیسے کی کمی

انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر  197.86روپے کی سطح پر بند ہوا

انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر 197.86روپے کی سطح پر بند ہوا

 کراچی: آئی ایم ایف کی جانب سے پاکستان کو گائیڈ لائن جاری ہونے اور پاکستان کے لیے قرض پروگرام جلد بحال ہونے امید اور حکومتی اقدامات کی بدولت درآمدات کے حجم میں ممکنہ کمی کے باعث زرمبادلہ کی دونوں ماکیٹوں میں بدھ کو بھی ڈالر کی قدر تنزلی سے دوچار رہی جس سے ڈالر کے انٹربینک اور اوپن ریٹ 198روپے سے بھی نیچے آگئے۔

انٹربینک مارکیٹ میں کاروبار کے آغاز پر ڈالر کی قدر 1.54روپے کے اضافے سے 200روپے کی سطح پر پہنچ گئی تھی لیکن کچھ ہی وقفے کے بعد ڈیمانڈ گھٹنے سے ڈالر کی قدر میں کمی کا رحجان غالب ہوا جس سے انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر 60 پیسے کی کمی کے بعد 197.86روپے کی سطح پر بند ہوا جبکہ اوپن مارکیٹ میں بھی ڈالر 90 پیسے کی کمی کے بعد 197.40روپے کی سطح پر بند ہوا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت ریکارڈ سطح پر پہنچنے اور دیگر کموڈٹیز کی بڑھتی ہوئی قیمتیں آنے والے دونوں میں ناصرف ڈالر کی قدر پر اثرانداز ہوسکتی ہیں بلکہ ملک کا درآمدی بل کا حجم بھی بڑھ سکتا ہے۔