پاکستان کو بیرون ملک سے 3 ارب 9 کروڑ ڈالر کا فنڈ ملا

پاکستان کو کورونا سے نمٹنے کیلیے بیرون ملک سے 3 ارب 9 کروڑ ڈالر ملے۔

چیئرمین صادق سنجرانی کی زیر صدارت اجلاس میںوزارت خزانہ نے بتایاآئی ایم ایف نے 1386، ایشین انفرا اسٹرکچر انوسمنٹ بینک 750، ورلڈ بینک 114.2، اے ڈی بی 248 اور فرانس نے 21.42 ملین ڈالر قرض دیا۔

یورپین یونین نے 39.50، امریکا 20.87، جاپان 6.87، اے ڈی بی 0.50، چین 4، برطانیہ 3.38، کینیڈا 2.39، جنوبی کوریا 0.85، اقوام متحدہ 0.40 اور اسلامک ترقیاتی بینک نے 0.21 ملین ڈالرکی امداد دی۔

گزشتہ اڑھائی برسوں میں ملکی و غیرملکی قرضوں میں 12.5 کھرب روپے اضافہ ہوا، حکومت نے 4کھرب 99ارب 35کروڑ 80لاکھ روپے کے قرضے واپس بھی کئے۔ 2015/16ء میں 20 ارب 78 کروڑ، 2016/17ء میں 20 ارب 42 کروڑ، 2017/18ء میں 23 ارب21 کروڑ ڈالرکی برآمدات، 2018/19ء میں 22 ارب 95 کروڑ ڈالر کی درآمدات، 2019/20ء میں برآمدات 21 ارب 39 کروڑ، مارچ تک 18 ارب 68 کروڑ ڈالرکی رہیں۔

وزارت خزانہ نے بتایا این ایف سی ایوارڈ ارکان کے باہمی اتفاق سے ختم کر دیا گیا، حکومت نئے ایوارڈ کو جلدی حتمی صورت دینے کیلئے سہولت فراہم کر رہی ہے۔ رضا ربانی نے وزیر اور سیکرٹری خزانہ کی تبدیلی پر خدشہ ظاہر کیا، آئندہ عوام کش بجٹ حکومت پاکستان کا نہیں بلکہ آئی ایم ایف کا ہوگا، ہم اسے تسلیم کرنے کیلئے تیار نہیں۔

قائد ایوان شہزاد وسیم نے موقف اپنایا وزیراعظم کا حق ہے جسے چاہے اپنی ٹیم میں رکھیں، معاشی اعشاریے بہتری کی طرف جا رہے ہیں، آئندہ بجٹ پر دیکھے بغیر تنقید کا جواز نہیں، حکومت کا ہدف ہے معاشی نظام میں ایسی بہتری لائے کہ آئی ایم ایف سے ہمیشہ کیلئے چھٹکارا مل سکے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو