ویت نام میں کورونا وائرس کی نئی مہلک قسم دریافت

ویت نام میں کورونا وائرس کی نئی مہلک قسم دریافت ہوئی ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ویت نام میں کورونا وائرس کی نئی قسم کے کیسز کی تصدیق بھی ہوئی ہے۔

ماہرین کے مطابق یہ نئی قسم بھارت اور برطانیہ میں کورونا کی کئی اقسام کے ملنے سے وجود میں آئی، یہ قسم زیادہ خطرناک اور آسانی سے پھیلنے والی ہے۔

خبر ایجنسی کے مطابق نئی قسم سے کورونا وائرس کے پھیلاؤ میں تیزی آرہی ہے جس کے بعد ویت نام کےکاروباری مرکز ہوچی من سٹی میں دو ہفتوں کی سماجی پابندیاں نافذ کردی گئی ہیں۔

نئی پابندیوں کا اطلاق کل سے ہوگا اور شہر میں 10 سے زائد افراد کے اجتماع پر پابندی ہوگی۔

ویت نام: بھارتی و برطانوی کورونا کا ملاپ، نیا وائرس سامنے آگیا

ویت نام میں سامنے آنے والی نئی قسم بھارتی اور برطانوی کورونا وائرس کے ویرینٹ کے ملنے سے وجود میں آئی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ ویت نام میں سامنے آنے والی کورونا وائرس کی یہ نئی قسم زیادہ خطرناک اور آسانی سے پھیلنے والی ہے۔

ویت نام کورونا وائرس کے کیسز کے حوالے سے مرتب کی گئی فہرست میں 162 ویں نمبر پر ہے جہاں اس کے اب تک 6 ہزار 908 مریض رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ 47 کورونا مریض موت کا شکار ہوئے ہیں۔

دوسری جانب دنیا بھر میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے پونے 5 لاکھ سے زائد نئے کیسز سامنے آئے ہیں جبکہ ساڑھے 10 ہزار سے زائد کورونا مریض موت کے منہ میں پہنچ گئے۔

دنیا بھر میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 17 کروڑ 6 لاکھ 37 ہزار 911 تک جا پہنچی ہے جبکہ اس موذی وائرس سے اموات 35 لاکھ 48 ہزار 837 ہو گئیں۔

کورونا وائرس کے دنیا بھر میں 1 کروڑ 44 لاکھ 69 ہزار 476 مریض اسپتالوں، قرنطینہ مراکز میں زیرِ علاج اور گھروں میں آئسولیشن میں ہیں، جن میں سے 92 ہزار 20 کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ 15 کروڑ 26 لاکھ 19 ہزار 598 کورونا مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو