نیب کے ہوتے ہوئے ملک نہیں چل سکتا، شاہد خاقان عباسی

حکومت جھوٹے مقدمات بنا کر اپوزیشن کو دبانے میں لگی ہوئی ہے، شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد: سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ نیب کے ہوتے ہوئے ملک نہیں چل سکتا۔

اپنے بیان میں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پاکستان میں کورونا کیسز بڑھ رہے ہیں، معیشت تباہی کے دہانے پر آپہنچی ہے، حکومت کورونا چیلنج سے نمٹنے میں ناکام نظر آرہی ہے، بے روزگاری اور مہنگائی نے عام آدمی کی کمر توڑ دی ہے، شہباز شریف آج وزیراعلیٰ ہوتے تو پنجاب کے حالات مختلف ہوتے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ نیب نے شہباز شریف کو پھر نوٹس جاری کردیا ہے ایسی بھی کیاعجلت ہے، شہباز شریف میڈیکل ایشوز کی وجہ سے آئسولیشن میں ہیں، ان کے خلاف بدنیتی پرمبنی کارروائی ہورہی ہے، نیب کو چینی، آٹے اور کورونا وائرس سامان کی خریداری میں گھپلے نظر نہیں آرہے، نیب کے ہوتے ہوئے ملک نہیں چل سکتا، نیب اور حکمرانوں نے مل کر سیاست اور ملک کی معیشت کو تباہ کر دیا ہے، ہم جیل یا نیب سے نہیں گھبراتے، حکومت کے ہتھکنڈوں کا مقابلہ کریں گے، صرف اتنا کہتے ہیں کہ 22 اپریل کو شہباز شریف سے جو انکوائری کرنی ہے آن کیمرہ کی جائے۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ حکومتوں کا کام عوامی مسائل حل کرنا ہے، لیکن حکومت اپوزیشن کو دبانے کیلئے جھوٹے مقدمات چلانے میں لگی ہے، اپوزیشن رہنماؤں کو بے عزت کرنے کے لیے گرفتار کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، شہبازشریف کے ساتھ جو کچھ ہو رہا ہے وہ ایک گھٹیا سوچ ہے، ان کے خلاف ڈیلی میل میں پیسے دے کر خبر چھپوائی گئی، ان کے گھر چھاپے مارے گئے، حمزہ شہباز کی حراست کو 90 روز سے زائد ہوگئے لیکن کیس کا پتا نہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو