مقبوضہ جموں و کشمیر میں 5 اگست کے بھارتی اقدام سے صورت حال ابتر

بھارت کی مودی سرکار نے ایک سال پہلے 5 اگست کو مقبوضہ کشمیر کی خود مختاری ختم کرکے وادی کو ترقی دینے کے بلند بانگ دعوؤں کا بھارتی اخبار نے ہی پول کھول دیا۔

اخبار کا کہنا ہے کہ ایک سال میں مقبوضہ کشمیر کی معیشت مزید ابتر ہوگئی ہے اور بے روزگاری میں بے انتہا اضافہ ہوگیا ہے۔

بھارتی اخبار کی رپورٹ کے مطابق بھارت کی جانب سے 5 اگست 2019ء کے یک طرفہ اقدام کے بعد مقبوضہ کشمیر میں ایک سال کے دوران 4 لاکھ 56 ہزار افراد بے روزگار ہوچکے ہیں۔

مقبوضہ وادی کی معیشت کو 40 ہزار کروڑ روپے سے زائد کا نقصان اٹھانا پڑا ہے۔ جبکہ چھ ہزار ایکڑ زرعی زمین کو صنعتی مقاصد کے لیے مختص کردیا گیا۔

بھارتی اخبار کا کہنا ہے کہ یہ صورت حال آرٹیکلز 370 اور 35 ۔اے کے خاتمے کے منفی اثرات کا نتیجہ ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو