مسلم لیگی رکن اسمبلی انتقال کر گئے، انتہائی افسوس ناک خبر

وزیر آباد سے مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی شوکت منظور چیمہ کورونا وائرس کے باعث انتقال کرگئے ۔ایم پی اے شوکت منظور چیمہ لاہور میں زیرعلاج تھے۔

انھیں 1979ء سے بلڈ کینسر تھا، جس کی وجہ سے انھیں انگلینڈ سے خون تبدیل کروانے کی ضرورت پڑتی رہتی تھی. بین الاقوامی پروازیں بند ہونے کی وجہ سے ان کی طبیعت بگڑنے لگی.

میڈیار پورٹس کے مطابق چند روز قبل مسلم لیگ ن کے ایم پی اے میں شوکت منظور چیمہ میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی تھی اور انہیں حالت بگڑنے پر وینٹی لیٹر پر منتقل کر دیا گیا تھا۔

66سالہ چوہدری شوکت منظور چیمہ کورونا ٹیسٹ پازیٹو آنے کے بعد 25مئی سے پاکستان کڈنی لیور انسٹی ٹیوٹ لاہور میں زیر علاج تھے. چوہدری شوکت منظور چیمہ تیسری بار مسلم لیگ ن کے ٹکٹ سے ایم پی اے منتخب ہوئے تھے۔ اس سے قبل وہ تحصیل ناظم وزیرآباد بھی رہ چکے ہیں۔ چوہدری شوکت منظور چیمہ نواحی علاقہ مردیکے (منظور آباد)کے رہائشی تھے جن کے والد منظور حسین چیمہ بھی ممبر ضلع کونسل گوجرانوالہ رہ چکے ہیں۔ واضح رہے کہ شوکت چیمہ پی پی 51 سے رکن پنجاب اسمبلی تھے۔

شوکت منظور چیمہ کی وفات کی خبر سنتے ہی کارکنان افسردہ ہوگئے جبکہ قریبی عزیز دوست احباب اشکبار ہوگئے۔ مرحوم کا شمار شہباز شریف کے قریبی ساتھیوں میں ہوتا تھا۔ مرحوم کینسر کے مرض میں بھی مبتلا تھے. مرحوم کی تدفین حکومتی ضابطہ کار کے مطابق ہوگی۔ تاہم لواحقین سے تعزیت کیلئے شہریوں کی بڑی تعدادمرحوم کی رہائش گاہ منظور آباد پر جمع ہونا شروع ہوگئی۔

ضلع گوجرانوالہ سے تعلق رکھنے والے دو ایم پی اے کورونا وائرس کی وجہ سے جان کی بازی ہار چکے ہیں۔
ایم پی اے شاہین رضا صاحبہ
ایم پی اے شوکت منظور چیمہ صاحب

اس سے قبل تحریک انصاف کے خیبر پختونخواہ کے رکن صوبائی اسمبلی جمشید الدین کاکاخیل، جمعیت علمائے اسلام (ف) سے تعلق رکھنے والے رکن قومی اسمبلی منیر اورکزئی بھی کورونا وائرس کی وجہ سے انتقال کر گئے تھے۔ لاہور سے تعلق رکھنے والے جے یو آئی ف کے رہنما امتیاز قمر کا بھی گزشتہ روز کورونا وائرس کے باعث انتقال ہوا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو