حجر اسود کے بعد مقام ابراہیم کی نایاب تصاویر

حجر اسود کی جدید تکنیک سے لی گئی خوبصورت اور واضح تصاویر منظر عام پر آنے کے بعد مقام ابراہیم کی نایاب تصاویر سامنے آگئیں۔

مکہ مکرمہ میں مسجدالحرام کے صحنِ مطاف میں موجودان تصاویر کو جدید فوٹوگرافی کی مدد سے بنایا گیا ہے۔

حرمین شریفین کی انتظامیہ کی جانب سے ان تصاویر کو سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر جاری کیا گیا ہے۔

فوٹو:@ReasahAlharmain

یہ تصاویر اب حرمین انتظامیہ کے ٹوئٹر اور دیگر اکاؤنٹس سے بھی مقبول ہو رہی ہیں اور انہیں انتہائی پسند کیا جارہا ہے۔

فوٹو:@ReasahAlharmain

خیال رہےکہمقام ابراہیم خانہ کعبہ کے مشرقی حصے پر وہ مقام ہے جہاں حضرت ابراہیم علیہ السلام نے ایک پتھر پر کھڑے ہو کر خانہ کعبہ کی تعمیر کی تھی اور اس پتھر پر آپؑ کے قدموں کے نشانات بھی موجود ہیں۔

فوٹو:@ReasahAlharmain

مقام ابراہیم کو ایک سنہرے جنگلے کے ذریعے محفوظ کیا گیا ہے. حجاج اور معتمرین خانہ کعبہ کے طواف کے دوران مقام ابراہیم کی زیارت کرتے ہیں۔

مقام ابراہیم کے باہر کا منظر

رئیس حرمین شریفین کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے مزید تفصیلات بھی جاری کی گئی ہیں جس کے مطابق مقام ابراہیم کے پتھر پر موجود قدموں کے نشانات کی لمبائی اور چوڑائی 50 سینٹی میٹر ہے۔

رئیس حرمین شریفین کی جانب سے اس پتھر کی فضیلت بیان کرتے ہوئے حدیث رسول ﷺ بیان کی گئی ہے، جس کے مطابق حجر اسود اور مقام ابراہیم جنت کے یاقوتوں میں سے دو یاقوت ہیں، اگر اللہ تعالیٰ نے ان کی چمک اور نورانیت کو ختم نہ کیا ہوتا تو ان کی چمک سے مشرق و مغرب کے درمیان سب کچھ روشن ہو جاتا۔

جدید تکنیک کی مدد سے مقام ابراہیم کی بنائی گئی اس قدر شفاف تصویریں پہلی مرتبہ سامنے آئی ہیں۔

خیال رہے کہ حرمین شریفین انتظامیہ کی جانب سے حجر اسود کی 49 ہزار میگا پکسل کی حد تک باریکی سے لی گئی تصاویر بھی پیش کی گئی ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو